ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شیعہ پرسنل لاء بورڈ 3طلاق کے حق میں نہیں، اس کے خلاف سپریم کورٹ میں داخل کر سکتا ہےعرضی

لکھنؤ۔ آل انڈیا شیعہ پرسنل لاء بورڈ تین طلاق کے حق میں نہیں ہے اور وہ اس کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی داخل کر سکتا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 22, 2016 09:12 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
شیعہ پرسنل لاء بورڈ 3طلاق کے حق میں نہیں، اس کے خلاف سپریم کورٹ میں داخل کر سکتا ہےعرضی
لکھنؤ۔ آل انڈیا شیعہ پرسنل لاء بورڈ تین طلاق کے حق میں نہیں ہے اور وہ اس کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی داخل کر سکتا ہے۔

لکھنؤ۔ آل انڈیا شیعہ پرسنل لاء بورڈ تین طلاق کے حق میں نہیں ہے اور وہ اس کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی داخل کر سکتا ہے۔ بورڈ کی ایگزیکٹو کمیٹی کی آج یہاں سلطان المدارس میں ہوئی میٹنگ کے بعد اس کے ترجمان مولانا ياسوب عباس نے بتایا کہ موجودہ قوانین کے مطابق شیعہ میں تین طلاق کا نظام صحیح نہیں پایا گیا۔ اس پر میٹنگ میں کافی بحث ہوئی۔ خیال رہے کہ ملک میں تین طلاق کے سلسلے میں بحث چل رہی ہے۔ ایسی صورت میں شیعہ پرسنل لاء بورڈ کا یہ فیصلہ کافی اہم ہے۔ بورڈ نے حکومت اور عدالت سے اس میں مداخلت کرنے کی اپیل کی ہے۔


اس درمیان بورڈ نے کانگریس نائب صدر راہل گاندھی کے روڈ شو کے دوران کل ان سے نہ ملنے کا فیصلہ کیا ہے، اگرچہ کچھ شیعہ مسلمانوں کے ساتھ ان کی ملاقات طے مانی جا رہی ہے۔ مسٹر عباس نے کہا کہ منموہن حکومت کے دوران مسٹر گاندھی اور ان کی ماں محترمہ سونیا گاندھی نے شیعہ کمیونٹی کے لئے کوئی ٹھوس کام نہیں کیا لہذا اب ملاقات کرنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔

First published: Sep 22, 2016 09:12 PM IST