உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سرسید ہندوستان میں تعلیم کو عالمگیریت عطا کرنے والے پہلے دانشور تھے: شکیل صمدانی

     پروفیسر صمدانی نے کہا کہ سرسید نے انگلینڈ جاکر آکسفورڈ اور کیمبرج کا باریک بینی سے مطالعہ کیا اور اسی طرز پر اے ایم یو کوقائم کیا۔

    پروفیسر صمدانی نے کہا کہ سرسید نے انگلینڈ جاکر آکسفورڈ اور کیمبرج کا باریک بینی سے مطالعہ کیا اور اسی طرز پر اے ایم یو کوقائم کیا۔

    پروفیسر صمدانی نے کہا کہ سرسید نے انگلینڈ جاکر آکسفورڈ اور کیمبرج کا باریک بینی سے مطالعہ کیا اور اسی طرز پر اے ایم یو کوقائم کیا۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:

      علی گڑھ ۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے مرشدآباد سینٹر میں سرسید احمد خاں وژن اینڈ مشن پر منعقدہ لیکچر سے خطاب کرتے ہوئے شعبۂ قانون کے سینئر استاد پروفیسر شکیل صمدانی نے کہا کہ سرسید ہندوستان میں تعلیم کو عالمگیریت عطا کرنے والے پہلے دانشور تھے۔          انہوں نے کہا کہ اے ایم یو کے قیام میں سرسید کے عزم اور قربانی کے جذبے نے ایک اہم رول ادا کیا۔ پروفیسر صمدانی نے کہا کہ سرسید نے انگلینڈ جاکر آکسفورڈ اور کیمبرج کا باریک بینی سے مطالعہ کیا اور اسی طرز پر اے ایم یو کوقائم کیا۔انہوں نے کہا کہ اولین جنگِ آزادی کی ناکامی کے بعد بھی سرسید مایوس نہیں ہوئے اور قوم کو خود کفیل بنانے کے لئے اپنی مہم کو جاری رکھا اور اپنے ہدف کے حصول کے لئے ہندو اور مسلمانوں کو یکجا کیا۔ پروفیسر شکیل صمدانی نے کہا کہ سرسید نے کامیابی کے لئے ایک ایسی نسل کو تیار کیا جس نے نہ صرف انگریزی حکومت کے خلاف جنگ چھیڑی بلکہ آزادی کے بعد قومی تعمیر میں بھی اپنا اہم تعاون پیش کیا۔ انہوں نے سرسید کی زندگی کے پوشیدہ پہلوؤں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ برٹش دورِ حکومت میں اسٹامپ ایکٹ1882، رجسٹریشن آف ڈاکیومنٹ اینڈ دا کازیز ایکٹ1880 کے نفاذ میں سرسید نے بیش قیمت تعاون پیش کیا۔


                  پروفیسر صمدانی نے کہا کہ موجودہ وائس چانسلر سرسید کے مشن کو آگے بڑھا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان کے دور میں کیمپس میں پوری طرح تعلیمی ماحول قائم ہوا ہے اور اے ایم یو کے طلبأ ہر میدان میں امتیاز حاصل کرکے اس ادارہ کا نام روشن کر رہے ہیں اور ہر سال اے ایم یو کی رینکنگ اوپر جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کو عام انسان تک پہونچانے کے لئے صوبے بھر میں سرسید پبلک اسکول قائم کئے جارہے ہیں۔ پروفیسر صمدانی نے کہا کہ وائس چانسلر تمام مراکز کے مسائل کے تعلق سے بے حد سنجیدہ ہیں اور ان کے حل پر پوری توجہ دے رہے ہیں۔انہوں نے طلبأ کو یقین دہانی کرائی کہ وہ ان کے مسائل کو وائس چانسلر کے سامنے پیش کریں گے۔پروفیسر صمدانی نے کہا کہ آئینِ ہند تمام مذاہب کے ماننے والوں کو مساوی حقوق دیتا ہے اور سب ہی کو آئین کا احترام کرنا چاہئے۔  مرشدآباد سینٹر کے ڈائرکٹر ڈاکٹر بدر الزماں نے پروفیسر صمدانی کا خیر مقدم کیا۔ اس موقع پر بڑی تعداد میں طلبأ و اساتذہ موجود تھے۔

      First published: