ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اسمرتی ایرانی کی وضاحت ، کہا : حادثہ کی شکار کی مدد کی تھی

نئی دہلی : متھرا کے نزدیک انسانی وسائل کی مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کے قافلہ سے ہونے والے حادثہ پر اٹھے تنازعہ میں انہوں نے کہا کہ حادثہ میں مرنے والے ڈاکٹر کے کنبہ کے دعوی کو غلط بتایا ہے اور کہا کہ انہوں نے خود ایمولنس بلانے کے لئے فون کیا تھا تاکہ متاثرین کو طبی امداد مل سکے۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 07, 2016 10:41 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اسمرتی ایرانی کی وضاحت ، کہا :  حادثہ کی شکار کی مدد کی تھی
نئی دہلی : متھرا کے نزدیک انسانی وسائل کی مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کے قافلہ سے ہونے والے حادثہ پر اٹھے تنازعہ میں انہوں نے کہا کہ حادثہ میں مرنے والے ڈاکٹر کے کنبہ کے دعوی کو غلط بتایا ہے اور کہا کہ انہوں نے خود ایمولنس بلانے کے لئے فون کیا تھا تاکہ متاثرین کو طبی امداد مل سکے۔

نئی دہلی : متھرا کے نزدیک انسانی وسائل کی مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کے قافلہ سے ہونے والے حادثہ پر اٹھے تنازعہ میں انہوں نے کہا کہ حادثہ میں مرنے والے ڈاکٹر کے کنبہ کے دعوی کو غلط بتایا ہے اور کہا کہ انہوں نے خود ایمولنس بلانے کے لئے فون کیا تھا تاکہ متاثرین کو طبی امداد مل سکے۔

ایچ آر ڈی وزارت کے ایک ترجمان نے ڈاکٹر رمیش ناگر کی بیٹی کے ان الزامات کو مسترد کردیا کہ انہوں نے وزیر سے مدد مانگی مگر وہ نہیں رکیں اور وہ مسز ایرانی کی ہی کار تھی جس نے ان کی باپ کی موٹر سائیکل کو ٹکر ماری تھی۔ جس پر وہ اور اس کی کزن سوار تھی۔ لڑکی نے کہا ہے کہ اگر وہ کار میں اس کے باپ کو لے جاتیں تو ان کی جان بچ جاتی۔

ترجمان نے کہا جس کار نے ٹکر ماری تھی وہ مسز ایرانی کے قافلہ کا حصہ نہیں تھی۔ حقیقت تو یہ ہے کہ حادثہ ن کے وہاں پہنچنے سے کافی پہلے ہوا تھا۔ یہ حادثہ ہونڈا سٹی کار سے ہوا تھا جسے دو عورتیں چلارہی تھی وہ ہمارے قافلہ کا حصہ نہیں تھیں۔ نیز کہا کہ حادثہ کے بعد یمنا ایکسپریس وے پر لمبا جام لگ گیا تھا۔

First published: Mar 07, 2016 10:41 PM IST