ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سونیا، راہل اورپرینکا گاندھی سمیت کانگریس کے سینئر لیڈروں کا راج گھاٹ پر ’ستیہ گرہ'، شہریت ترمیمی قانون کی مخالفت

سی اے اے کے خلاف کانگریس نے بابائے قوم مہاتما گاندھ کی سمادھی راج گھاٹ پر پیرکو ’ستیہ گرہ‘ کیا جس میں پارٹی صدر سونیا گاندھی، راہل گاندھی، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ اورپارٹی کےکئی سینئر لیڈران موجود تھے۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 23, 2019 11:57 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سونیا، راہل اورپرینکا گاندھی سمیت کانگریس کے سینئر لیڈروں کا راج گھاٹ پر ’ستیہ گرہ'، شہریت ترمیمی قانون کی مخالفت
ستیہ گرہ کے دوران سونیا گاندھی، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ اورراہل گاندھی نے آئین بھی پڑھا۔

نئی دہلی: شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے)کے خلاف کانگریس نے بابائے قوم مہاتما گاندھی کی سمادھی راج گھاٹ پر پیرکو ’ستیہ گرہ‘ کیا جس میں پارٹی صدر سونیا گاندھی، سابق پارٹی صدر راہل گاندھی، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ اورپارٹی کےکئی سینئرلیڈران موجود تھے۔ ستیہ گرہ کےدوران راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈرغلام نبی آزاد، لوک سبھا میں پارٹی کے لیڈر ادھیر رنجن چودھری اورمشرقی اترپردیش کی انچارج جنرل سکریٹری پرینکا  گاندھی وڈرا، سکریٹری جنرل کے سی وینوگوپال، راجستھان کے وزیراعلی اشوک گہلوت، مدھیہ پردیش کے وزیراعلی کمل ناتھ، سابق لوک سبھا اسپیکر میرا کمار، سینئر پارٹی لیڈر احمد پٹیل، آنند شرما سمیت کئی مشہور شخصیات موجود تھیں۔ ستیہ گرہ تقریبا تین بجے شروع ہوا، اس دوران وہاں بڑی تعداد میں کانگریس کارکنان بھی موجود تھے، جو ہاتھوں میں پارٹی کا جھنڈا لئے ہوئے تھے۔ستیہ گرہ شروع کرنے سےپہلے وندے ماترم گایا گیا۔ پروگرام میں کبیر کے بھجن گائے گئے اور کئی لیڈروں نے آئین کے پریمبل مختلف زبانوں میں پڑھی۔

وزیراعظم مودی اور شاہ آواز نہیں دبا سکتے : راہل گاندھی


کانگریس کےسابق صدرراہل گاندھی نےکہا کہ ملک کے دشمنوں نے ملک کی ترقی کی آواز کو دبانے کی بھرپور کوشش کی۔ دشمنوں نے ہماری ترقی روکنے، معیشت کو تباہ کرنے اور ترقی میں رخنہ ڈالنے کی پوری کوشش کی لیکن ملک کی اس آواز نے دشمن کا جم کر مقابلہ کیا۔ انہوں نےکہا کہ ’’عجیب بات ہے کہ جو کام ملک کے دشمنوں نے نہیں کیا، وہ کام نریندر مودی کر رہے ہیں۔ وہ عدلیہ پر دباؤ ڈالتے ہیں۔ وہ طالب علموں کو، صحافیوں، چھوٹے كاروباريوں کو دباتے اور ڈراتے ہیں اور ملک کی آواز کو خاموش کرنے کی کوشش کرتے ہیں‘‘۔

راہل گاندھی نےکہا کہ ’’کانگریس صرف ایک سیاسی جماعت نہیں ہے بلکہ ملک کی آواز ہے۔ حکومت کی تقسیم کرنے والی پالیسیوں کے خلاف کانگریس کی نہیں بلکہ یہ بھارت ماتا (مادر وطن) کی آواز ہے۔ مسٹر شاہ اور مسٹر مودی کو سمجھ لینا چاہئے کہ اگر آپ بھارت ماتا کی آواز دبانے کی کوشش کریں گے تو بھارت ماتا آپ کو زبردست جواب دے گی۔ جہاں تک کپڑوں کی بات ہے تو پورا ملک آپ کو پہنچانتا ہے۔ دو کروڑ روپے کا سوٹ کسی نے نہیں، صرف آپ نے ہی پہنا تھا۔ آپ نے ملک کی معیشت كو تباہ کر دیا ہے۔ جی ڈی پی گھٹ گئی ہے۔ معیشت پٹری پر نہیں لا پا رہے ہیں لہذا نفرت کے پیچھے چھپ رہے ہیں۔ آپ کو نفرت کے پیچھے سے باہر آکر ملک کے عوام کو بتانا چاہیے کہ آپ نے کیا کام کیا ہے۔ آپ کے پاس اس کا کوئی جواب نہیں ہے‘‘۔


 




تقسیم کرنے والی طاقتوں کے خلاف کانگریس
اس سے پہلے پارٹی کے جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال نے ستیہ گرہ ختم کرنے کی گاندھی سے اپیل کی اورکہا کہ ان کی قیادت میں کانگریس بہادری سے تقسیم کرنے والی طاقتوں کے خلاف لڑ رہی ہے۔ انہوں نےکہا کہ حکومت نے مسٹر گاندھی کے خلاف 16 مقدمے درج کئے ہیں لیکن اسے سمجھ لینا چاہئے کہ کانگریس اس سے ڈرنے والی نہیں ہے۔
پارٹی کے لیڈر جیوتیرآدتیہ سندھیا نے کہا ہے کہ ہندوستاسن کی آتما بلند ہے اور وہ ہمیشہ بلند رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ بابائے قوم مہاتما گاندھی کی سمادھی سے کانگریس عدم تشدد کا پیغام لے کر ملک کو مضبوطی کے ساتھ آگے لے جانے کے لئے پرعزم ہے۔
کانگریس لیڈر پرمود تیواری نے کہا کہ پارٹی آج ان کے چرنوں میں بیٹھی ہے، جنہوں نے ملک کوعدم تشدد کے راستے سے آزادی دلائی تھی اورکانگریس باپوکےعدم تشدد کے اصول کے ساتھ آگے بڑھےگی۔ انہوں نے کہا کہ انگریزوں نے ہمیں مذہب کے نام پر لڑوایا تھا اور ہم پر حکومت کی تھی اور بھارتیہ جنتا پارٹی آج اسی راہ پر چل رہی ہے۔ بی جے پی حکومت آئین کا قتل کر رہی ہے لیکن کانگریس ایسا نہیں ہونے دے گی۔
First published: Dec 23, 2019 11:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading