உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کیرالہ میں کورونا کو لے کر دکھ رہی لاپروائی ، وزارت صحت نے بتائی سخت لاک ڈاون کی ضرورت

    کیرالہ میں کورونا کو لے کر دکھ رہی لاپروائی ، وزارت صحت نے بتائی سخت لاک ڈاون کی ضرورت (Pic- AP)

    کیرالہ میں کورونا کو لے کر دکھ رہی لاپروائی ، وزارت صحت نے بتائی سخت لاک ڈاون کی ضرورت (Pic- AP)

    Coronavirus in Kerala: کیرالہ میں 85 فیصد کورونا مریض ہوم آئیسولیشن میں ہیں ،لیکن ان مریضوں کی ٹھیک سے مانیٹرنگ نہیں ہورہی ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : ملک میں کورونا وائرس انفیکشن کے بڑھتے معاملات روزانہ کم اور زیادہ ہورہے ہیں ۔ اس درمیان ماہرین تیسری لہر کی بھی وارننگ دے چکے ہیں ۔ وہیں اس وقت کیرالہ ، ملک میں کورونا انفیکشن کو لے کر تشویش بڑھا رہا ہے ۔ کیرالہ میں روزانہ بڑی تعداد میں نئے معاملات سامنے آرہے ہیں ۔ اس پر وزارت صحت کے اعلی سطحی ذرائع کا کہنا ہے کہ بگڑتے حالات پر قابو پانے کیلئے کیرالہ میں حکمت عملی کے تحت لاک ڈاون کی ضرورت ہے ۔

      ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر سخت لاک ڈاون اور سخت کنٹینمنٹ ضوابط اپنائے جائیں تو ستمبر کے وسط تک کیرالہ میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے معاملات میں کمی آسکتی ہے ۔ اس طرح کا لاک ڈاون پورے ضلع سطح پر نہیں ، بلکہ محلہ اور قصبہ کی بنیاد پر لگایا جائے ، جہاں زیادہ لوگ پازیٹیو مل رہے ہیں ۔ کیرالہ میں 85 فیصد کورونا مریض ہوم آئیسولیشن میں ہیں ،لیکن ان مریضوں کی ٹھیک سے مانیٹرنگ نہیں ہورہی ہے ، جس کی وجہ سے معاملات بڑھ رہے ہیں ۔ کیونکہ وہ لوگ مسلسل گھوم رہے ہیں اور لوگوں کے درمیان انفیکشن پھیلا رہے ہیں ۔

      مرکزی حکومت کی جانب سے کافی پہلے ہی کیرالہ سرکار کو محدود لاک ڈاون کا مشورہ دیا گیا تھا ۔ بڑھتے معاملات کے پیش نظر حال ہی میں داخلہ سکریٹری کی میٹنگ میں بھی ضروری مقامات پر لاک ڈاون لگانے کی بات کہی گئی ہے ۔

      مرکزی حکومت نے ریاست میں کورونا انفیکشن کو دیکھتے ہوئے لوگوں کی آمدورفت پر پابندیاں لگانے کا مشورہ دیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ جن اضلاع میں زیادہ انفیکشن بڑھ رہا ہے ، وہاں سخت قدم اٹھانا ضروری ہے ۔ کنٹینمنٹ زون کو مزید بہتر کرنے کی ضرورت ہے ۔

      وہیں مرکزی حکومت کی طرف سے وقتا فوقتا پر دئے گئے مشوروں پر ٹھیک سے عمل نہیں کیا گیا ۔ مینجمنٹ میں کمی کی وجہ سے اتنے طویل عرصہ سے انفیکشن پھیلا ہوا ہے ۔ کیرالہ میں ہفتہ واری پازیٹیویٹی شرح ۔۔۔۔۔۔ فیصد کے درمیان ہے ۔ کیرالہ کا اثر اب پڑوسی ریاستوں میں بھی نظر آنا شروع ہوگیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: