உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سماج وادی پارٹی میں اختلاف تیز، 'خط' پر اکھلیش سے ملائم ناراض، ادے ویر برخاست

    سماج وادی پارٹی سپريمو ملائم سنگھ نے اپنی سرکاری رہائش گاہ پر پارٹی کے بڑے رہنماؤں کی اہم میٹنگ کی۔

    سماج وادی پارٹی سپريمو ملائم سنگھ نے اپنی سرکاری رہائش گاہ پر پارٹی کے بڑے رہنماؤں کی اہم میٹنگ کی۔

    سماج وادی پارٹی سپريمو ملائم سنگھ نے اپنی سرکاری رہائش گاہ پر پارٹی کے بڑے رہنماؤں کی اہم میٹنگ کی۔

    • IBN Khabar
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ لاکھ دعووں کے باوجود اترپردیش کے سماج وادی پارٹی کنبے میں خاندانی اختلاف ختم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ لکھنؤ میں تین مختلف مقامات پر ملاقات اور غوروخوض کا دور چلا۔ ریاستی صدر شیو پال یادو  نے ریاستی ایگزیکٹو کی میٹنگ کی۔ دوسری میٹنگ ملائم سنگھ کی رہائش گاہ پر ہوئی جس میں سماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر كرمی نندا، بینی پرساد ورما، ریوتی رمن سنگھ، ماتا پرساد اور نریش اگروال شامل ہوئے۔ وہیں، وزیر اعلی اکھلیش یادو نے اپنے قریبی لوگوں کے ساتھ اپنی رہائش گاہ پر ایک میٹنگ کی۔

      ذرائع کے مطابق، ملائم، اکھلیش یادو سے بے حد ناراض ہیں۔ پارٹی میں جاری خطوط کا سلسلہ اس کی وجہ ہے۔ ملائم نے سخت پیغام دیتے ہوئے خط لکھنے والے ایم ایل سی ادے ویر کو پارٹی سے 6 سال کے لئے باہر کر دیا ہے۔ وہیں ملائم سنگھ کے ساتھ ملاقاتوں کے دور کے بعد اب سینئر لیڈران بینی پرساد ورما، نریش اگروال، ماتاپرساد اور ریوتی رمن اکھلیش سے ملاقات کریں گے۔

      ادھر، شیو پال نے کارکنوں کے نام خط لکھا ہے۔ اس میں پانچ نومبر کی تقریب کو کامیاب بنانے کے ساتھ ہی تمام ساری باتیں لکھی ہیں۔ لیکن وزیر اعلی اکھلیش کی رتھ یاترا کا ذکر نہیں ہے۔ اس میں ملائم کے ساتھ ہی اکھلیش کے بھی کاموں کی تعریف ہے۔

      ملائم کی ایس پی لیڈروں کے ساتھ اہم میٹنگ

      سماج وادی پارٹی سپريمو ملائم سنگھ نے اپنی سرکاری رہائش گاہ پر پارٹی کے بڑے رہنماؤں کی اہم میٹنگ کی۔ اس میٹنگ میں صوبائی صدر شیو پال یادو، بینی پرساد ورما، نریش اگروال، ماتا پرساد، ریوتی رمن اور كرنمے نندا جیسے رہنما شامل ہوئے۔ ذرائع کے مطابق اس میٹنگ میں پارٹی کے رہنماؤں کو متحد رکھنے کے طور طریقوں پر تبادلہ خیال ہوا۔ ساتھ ہی میٹنگ میں رہنماؤں نے سماج وادی پارٹی ایم ایل سی ادے ویر کے پوسٹ پر سخت اعتراض کیا۔ بتا دیں کہ ادے ویر نے پورے معاملے میں اکھلیش کی سوتیلی ماں سادھنا کا نام گھسیٹ لیا تھا۔ ادے ویر کا کہنا تھا کہ شیو پال سادھنا کا سیاسی چہرہ ہیں اور اکھلیش کے خلاف سازش رچی جا رہی ہے۔

      شیو پال نے بھی کی میٹنگ

      ریاستی صدر بننے کے بعد شیو پال یادو نے اسمبلی انتخابات کے پیش نظر اپنی سرکاری رہائش گاہ پر ایگزیکیٹیو کی میٹنگ بلائی۔ میٹنگ میں ان کے قریبی لوگوں کے شامل ہونے کی خبر آئی۔ سی ایم اکھلیش کو بھی اس میٹنگ میں شامل ہونے کے لئے مدعو کیا گیا تھا، لیکن وہ اس میٹنگ میں شامل نہیں ہوئے۔ اس سے پہلے جمعہ کو بھی اکھلیش، شیو پال کی میٹنگ میں شامل نہیں ہوئے تھے۔ اس دوران شیو پال حامیوں نے پارٹی دفتر کے باہر طاقت کا مظاہرہ کیا۔ شیو پال کے حامیوں کے ہاتھوں میں موجود پوسٹروں میں شیو پال یادو کو انقلاب کا ہیرو بتایا گیا۔

      گایتری پرجاپتی سے نہیں ملے اکھلیش

      وزیر اعلی اکھلیش یادو نے ملائم-شیو پال یادو کے قریبی اور کابینہ وزیر گایتری پرجاپتی سے ملنے سے انکار کر دیا۔ وزیر گایتری پرجاپتی، اکھلیش کے سرکاری ایڈریس 5 کالی داس مارگ پر ملنے گئے تھے۔ اس سے پہلے اکھلیش نے اپنی سرکاری رہائش گاہ پر ایس پی کے 'يوجن سبھا' کے رہنماؤں سے ملاقات کی۔ مانا جا رہا ہے اکھلیش نے یہ میٹنگ اپنی وکاس رتھ یاترا کی تیاریوں کو لے کر بلائی تھی۔
      First published: