உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بی ایچ بھارت سیریز کے ذریعہ گاڑیوں کی ایک ریاست سے دوسری ریاست منتقلی اب ہوگی آسان!

    بی ایچ بھارت سیریز کے ذریعہ گاڑیوں کی ایک ریاست سے دوسری ریاست منتقلی اب ہوگی آسان!

    بی ایچ بھارت سیریز کے ذریعہ گاڑیوں کی ایک ریاست سے دوسری ریاست منتقلی اب ہوگی آسان!

    روڈ ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز کی وزارت کی یہ اسکیم ہندوستان کی تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں ذاتی گاڑیوں کی مفت نقل و حرکت میں سہولت فراہم کرے گی۔

    • Share this:
      نئی دہلی : وزارت روڈ ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز (Ministry of Road Transport and Highways) نے گاڑیوں کی بغیر کسی رکاوٹ کی منتقلی کے لیے ایک نیا رجسٹریشن مارک متعارف کرایا ہے۔ جسے بھارت سیریز (بی ایچ سیریز) کہا گیا ہے۔ وزارت ٹرانسپورٹ نے کہا ہے کہ اگر مالک ایک ریاست سے دوسری ریاست میں منتقل ہو جائے تو بی ایچ نشان والی گاڑی کو نئے رجسٹریشن نشان کی ضرورت نہیں ہوگی ۔

      وزارت نے یہ بھی بتایا کہ یہ سہولت دفاعی اہلکاروں کو رضاکارانہ بنیادوں پر دستیاب ہوگی۔ مرکزی اور ریاستی حکومت کے ملازمین اور مرکزی اور ریاستی پی ایس یوز بھی اس سروس سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔ ان کے ساتھ نجی شعبے کی کمپنیاں بھی اسے استعمال کرسکتی ہیں، جن کے دفاتر 4 یا اس سے زیادہ ریاستوں یا مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں ہیں۔

      رجسٹریشن کے مراحل

      مرحلہ 1: گاڑیوں کے مالکان کو پہلے کسی دوسری ریاست میں نیا رجسٹریشن نشان تفویض کرنے کے لیے پہلی ریاست سے 'نو آبجیکشن سرٹیفکیٹ' کی ضرورت ہوگی۔

      مرحلہ 2: ایک بار جب نئی ریاست میں پرو راٹا کی بنیاد پر روڈ ٹیکس ادا کیا جائے گا، تو ایک نیا رجسٹریشن نشان تفویض کیا جائے گا۔

      مرحلہ 3: تیسرا سیٹ پہلی ریاست میں روڈ ٹیکس کی واپسی کے لیے درخواست داخل کرنا ہے۔ پہلی ریاست سے رقم کی واپسی کی فراہمی ایک انتہائی تکلیف دہ عمل ہے۔

      بھارت سیریز کا فارمیٹ (بی ایچ سیریز) رجسٹریشن مارک YY BH #### XX ہے۔

      اس نشان میں YY کا مطلب ہے پہلی رجسٹریشن کا سال، BH کا مطلب بھارت سیریز کا کوڈ ہے، جبکہ ####- 0000 سے 9999 (بے ترتیب) کا نمبر ہے۔ جہاں تک XX کی بات ہے، یہ حروف تہجی ہیں (AA سے ZZ)

      روڈ ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز کی وزارت کی یہ اسکیم ہندوستان کی تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں ذاتی گاڑیوں کی مفت نقل و حرکت میں سہولت فراہم کرے گی۔ سرکاری اور نجی دونوں شعبوں کے ملازمین کے ساتھ اسٹیشن کی نقل مکانی ہوتی ہے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ 14 سال کی تکمیل کے بعد موٹر وہیکل ٹیکس سالانہ لگایا جائے گا۔ یہ رقم کل رقم کا نصف ہوگی جو اس گاڑی کے لیے پہلے وصول کی جا رہی تھی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: