உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایک اور اسٹنگ، ہریش راوت مشکل میں، ممبران اسمبلی کو 25-25 لاکھ روپئے کی پیشکش

    نئی دہلی۔ اتراکھنڈ کی سیاست میں ایک نئے اسٹنگ سے طوفان آ گیا ہے۔

    نئی دہلی۔ اتراکھنڈ کی سیاست میں ایک نئے اسٹنگ سے طوفان آ گیا ہے۔

    نئی دہلی۔ اتراکھنڈ کی سیاست میں ایک نئے اسٹنگ سے طوفان آ گیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ اتراکھنڈ کی سیاست میں ایک نئے اسٹنگ سے طوفان آ گیا ہے۔ نیوز چینل سماچار پلس نے ایک نیا اسٹنگ جاری کیا ہے۔ اس اسٹنگ میں کانگریس کے باغی ممبر اسمبلی ہرک سنگھ راوت اور کانگریس کے رکن اسمبلی مدن سنگھ بشٹ بات چیت کر رہے ہیں۔

      اس بات چیت میں مدن سنگھ بشٹ یہ دعوی کر رہے ہیں کہ 12 ممبران اسمبلی کو 25-25 لاکھ روپے دیے گئے ہیں۔ اسٹنگ جاری کرنے والے نیوز چینل کا دعوی ہے کہ یہ اسٹنگ گزشتہ 10 دنوں میں کیا گیا ہے اور یہ دلی میں ہرک سنگھ راوت کے گھر پر کیا گیا ہے۔

      کانگریس کے خلاف ایک اور اسٹنگ سامنے لانے والے صحافی امیش کمار سے نامہ نگار وكرانت یادو نے بات کی۔ امیش نے کہا کہ وہ بغیر ڈرے اپنا کام کرتے رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ممبران اسمبلی کی خرید و فروخت اب بھی چل رہی ہے، یہ سب اس سے ثابت ہوتا ہے۔ کیا ہرک سنگھ راوت کی ملی بھگت سے کیا ہے؟ اس پر ان کا جواب تھا- نہیں، ہرک سنگھ کو اس بارے میں کچھ نہیں پتہ تھا۔

      وہیں سی ایم ہریش راوت کا کہنا ہے کہ ان کا فون ٹیپ کیا جا رہا ہے۔ یہی نہیں ہریش راوت نے الزام لگایا ہے کہ مرکزی ایجنسی کا استعمال کر ان کے رہنماؤں کو دھمکانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ہریش راوت کے مطابق ان کی حکومت کو گرانے کی ناپاک سازش میں ریاست کے 2 بڑے افسران بھی شامل ہیں۔ راوت نے بی جے پی جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ پر ریاست میں گینگ بنا کر گندگی پھیلانے کا الزام لگایا۔
      First published: