உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی میں دادری واقعہ کے خلاف احتجاج کے دوران طلبا کو حراست میں لیا گیا

    نئی دہلی۔  جواہر لعل نہرو یونیورسٹی، دہلی یونیورسٹی، جامعہ ملیہ اسلامیہ اور دیگر اداروں کے طلبا کی ایک بڑی تعداد کو آج دہلی پولیس نے حراست میں لے لیا۔

    نئی دہلی۔ جواہر لعل نہرو یونیورسٹی، دہلی یونیورسٹی، جامعہ ملیہ اسلامیہ اور دیگر اداروں کے طلبا کی ایک بڑی تعداد کو آج دہلی پولیس نے حراست میں لے لیا۔

    نئی دہلی۔ جواہر لعل نہرو یونیورسٹی، دہلی یونیورسٹی، جامعہ ملیہ اسلامیہ اور دیگر اداروں کے طلبا کی ایک بڑی تعداد کو آج دہلی پولیس نے حراست میں لے لیا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔  جواہر لعل نہرو یونیورسٹی، دہلی یونیورسٹی، جامعہ ملیہ اسلامیہ اور دیگر اداروں کے طلبا کی ایک بڑی تعداد کو آج دہلی پولیس نے حراست میں لے لیا۔ یہ طلبا دادری واقعہ کے خلاف وزیر اعظم کی رہائش گاہ تک احتجاجی مارچ نکالنے کی کوشش کررہے تھے۔



      پولیس کے مطابق تقریبا 350سے 400 طلبا کو فیروز شاہ روڈ پر حراست میں لیا گیا ہے کیونکہ وہ مارچ نکالنے کی کوشش کر رہے تھے۔ ایک سینئرپولیس افسر نے بتایا کہ ’’حراست میں لئے گئے طلبا کو پارلیمنٹ اسٹریٹ پولیس تھانہ لے جایا گیا ہے‘‘۔



      طلبا نے اترپردیش کے دادری میں پچاس سالہ اخلاق کو پیٹ پیٹ کر ہلاک کئے جانے کے خلاف احتجاج درج کرنے کے لیے وزیر اعظم کی رہائش گاہ پر مارچ اور مظاہرے کا منصوبہ بنایا تھا۔

      First published: