ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہندوستان میں کورونا وائرس کی صورت حال سنگین، دوبارہ لگ سکتا ہے لاک ڈاون: مطالعہ

ریسرچ میں لوگوں کی آمد ورفت اور بڑھتے معاملوں کو بنیاد بنایا گیا ہے جس کے پیش نظر نئے معاملے بڑھ سکتے ہیں۔

  • Share this:
ہندوستان میں کورونا وائرس کی صورت حال سنگین، دوبارہ لگ سکتا ہے لاک ڈاون: مطالعہ
علامتی تصویر

نئی دہلی۔ کورونا وائرس (Coronavirus) کے پیش نظر نافذ لاک ڈاون (Lockdown) میں اب کئی ملکوں میں نرمی دی جا رہی ہے۔ اس درمیان ہندوستان میں بھی یکم جون سے لاک ڈاون کے پانچویں مرحلے کے بیچ ان لاک کا عمل شروع کر دیا گیا ہے۔ وہیں، اب ایک مطالعہ میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان ان پندرہ ملکوں میں سے ہے جہاں لاک ڈاون میں دی جا رہی نرمی کی وجہ سے کووڈ۔ 19 کا انفیکشن تیزی سے بڑھ سکتا ہے اور اس سے دوبارہ لاک ڈاون لگانے جیسی صورت حال پیدا ہو سکتی ہے۔ یہ دعویٰ نومورا ریسرچ فرم نے اپنے تجزیہ میں کیا ہے۔


ریسرچ میں لوگوں کی آمد ورفت اور بڑھتے معاملوں کو بنیاد بنایا گیا ہے جس کے پیش نظر نئے معاملے بڑھ سکتے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے ’’ ہمارے ویزول ٹول نے جو نتائج دئیے ہیں، اس کے مطابق، 17 ممالک ایسے ہیں جہاں معیشت کو دوبارہ شروع کرنے کا عمل صحیح راستے پر یعنی آن ٹریک ہے اور وہاں کورونا کے دوسرے لمحہ یعنی دوسری لہر کے کوئی اشارے نظر نہیں آ رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق، 13 ملکوں میں کورونا کے دوبارہ لوٹنے کا اندیشہ جتایا جا رہا ہے اور 15 ممالک ایسے ہیں جہاں دوسری لہر آنے کا پورا اندیشہ ہے۔


لاک ڈاون میں نرمی کرنے سے یہ دو حالات پیدا ہو سکتے ہیں


تحقیق کے مطابق، لاک ڈاون میں نرمی کرنے کی وجہ سے دو طرح کے حالات پیدا ہو سکتے ہیں۔ پہلی حالت کو اچھا بتایا گیا ہے اور اس میں کہا گیا ہے ’ امریکہ جیسے ملک میں لاک ڈاون میں ڈھیل دئیے جانے کے بعد لوگوں کی آمدورفت بڑھی اور روزانہ معاملوں میں تھوڑے بہت اضافے کے ساتھ کاروباری خدمات شروع ہو گئی ہیں۔ جس کے پیش نظر لوگوں میں خوف کا ماحول ختم ہوا ہے اور لوگوں کی آمدورفت بڑھ رہی ہے۔ جیسے جیسے نئے معاملوں کی تعداد میں کمی آئے گی لوگوں کے بیچ مثبت فیڈ بیک جائے گا‘۔

وہیں، دوسری حالت بری ہے۔ جہاں کورونا کرو فلیٹ نہیں ہو رہا ہے اور روز نئے معاملے بڑی تعداد میں آ رہے ہیں۔ ایسے میں لوگوں کے اندر خوف بنا ہوا ہے اور لوگوں کی آمد ورفت بہت کم ہو رہی ہے۔ سنگین حالتوں میں کچھ جگہوں پر پھر سے لاک ڈاون لگایا جا سکتا ہے۔
First published: Jun 10, 2020 02:53 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading