ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

تین طلاق : مسلم پرسنل لا بورڈ کے ماڈل نکاح نامہ پر سنی اور شیعہ مذہبی رہنماوں میں اختلاف ، کسی نے کی حمایت تو کسی نے مخالفت

تین طلاق کے واقعات کو روکنے کیلئے آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ ماڈل نکاح نامے میں بڑی تبدیلی کرنے جارہا ہے ۔ کہا جارہا ہے کہ اب نکاح کے وقت ہی شخص کو ایک مرتبہ میں تین طلاق نہ دینے کا وعدہ تحریری طور پر کرنا ہوگا ۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
تین طلاق : مسلم پرسنل لا بورڈ کے ماڈل نکاح نامہ پر سنی اور شیعہ مذہبی رہنماوں میں اختلاف ، کسی نے کی حمایت تو کسی نے مخالفت
فائل فوٹو

لکھنو : تین طلاق کے واقعات کو روکنے کیلئے آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ ماڈل نکاح نامے میں بڑی تبدیلی کرنے جارہا ہے ۔ کہا جارہا ہے کہ اب نکاح کے وقت ہی شخص کو ایک مرتبہ میں تین طلاق نہ دینے کا وعدہ تحریری طور پر کرنا ہوگا ۔ وہیں میٹنگ کو لے کر تمام مذہبی رہنما بھی اپنی اپنی رائے ظاہر کررہے ہیں ۔ سنی مذہبی رہنما جہاں اس طرح کی کوششوں کی حمایت کرتے ہوئے نظر آرہے ہیں ، تو وہیں شیعہ مذہبی رہنما کا کہنا ہے کہ بورڈ کے اس قدم سے کچھ بھی نہیں ہونے والا ہے ۔

بورڈ کے ترجمان ظفریاب جیلانی کے مطابق بورڈ کی 9 فروری کو حیدرآباد میں شروع ہونے والی میٹنگ میں ترمیم شدہ ماڈل نکاح نامہ پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کی نئی تجویز کے مطابق نکاح کے وقت شوہر کو مستقبل میں کبھی بھی ایک ساتھ تین طلاق نہ دینے کا تحریری طور پر حلف لینا ہوگا۔

ادھر میٹنگ کو لے کر مذہبی رہنما بھی اپنی اپنی آرا کا اظہار کررہے ہیں ۔ جہاں سنی مذہبی رہنما سفیان نظامی نے بورڈ کی اس طرح کی کوششوں کی حمایت کی ہے وہیں شیعہ مذہبی رہنما یعسوب عباس کا کہنا ہے کہ اس سے کچھ بھی ہونے والا نہیں ہے۔ مولانا یعسوب عباس کے مطابق مسلم پرسنل لا بورڈ پہلے بھی ماڈل نکاح نامہ لا چکا ہے ، اسے بھوپال میں لانچ کیا گیا تھا ، مگر اس نکاح نامہ کو جلادیا گیا۔

First published: Feb 04, 2018 09:02 PM IST