உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سپریم کورٹ نے آربی آئی سے لون ڈیفالٹروں کی فہرست طلب کی

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے آج ریزروبینک آف انڈیا(آربی آئی)سے مختلف بینکوں سے 500کروڑ روپئے کے بقایہ جات اور ان سے بڑی رقومات لون لینے والی کمپنیوں کی بابت تفصیلی حلف نامہ عدالت میں پیش کر نے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے آج ریزروبینک آف انڈیا(آربی آئی)سے مختلف بینکوں سے 500کروڑ روپئے کے بقایہ جات اور ان سے بڑی رقومات لون لینے والی کمپنیوں کی بابت تفصیلی حلف نامہ عدالت میں پیش کر نے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے آج ریزروبینک آف انڈیا(آربی آئی)سے مختلف بینکوں سے 500کروڑ روپئے کے بقایہ جات اور ان سے بڑی رقومات لون لینے والی کمپنیوں کی بابت تفصیلی حلف نامہ عدالت میں پیش کر نے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے آج ریزروبینک آف انڈیا(آربی آئی)سے مختلف بینکوں سے 500کروڑ روپئے کے بقایہ جات اور ان سے بڑی رقومات لون لینے والی کمپنیوں کی بابت تفصیلی حلف نامہ عدالت میں پیش کر نے کے احکامات جاری کئے ہیں۔ چیف جسٹس آف انڈیا(سی جے آئی)تیرتھ سنگھ ٹھاکر کی سربراہی والی بینچ نے آربی آئی کو اس بابت مہر بند لفافے میں حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایات دی ہیں۔


      عدالت عظمی نے اپنے عبوری حکم نامہ میں کہا’’ہم نے آربی آئی کو ان کمپنیوں کی تفصیلات مہر بند لفافے میں پیش کرنے کی ہدایت جاری کی ہے جو بڑی رقومات پر بیٹھے ہوئے ہیں اور بینکوں کے قرض کو ادا نہیں کر رہے ہیں۔‘‘ عدالت نے کہا کہ یہ بہت حساس معاملہ ہے اور اس کو حل کرنے کی سمت میں کوشش کی جا رہی ہے۔


      عدالت عالیہ نے مفاد عامہ کی عرضی کی سماعت کے دوران یہ حکم جاری کیا۔عرضی میں ہڈکو سمیت متعدد کمپنیوں کی بابت کہا گیا تھا کہ ان کے ذمہ بینکوں کی بڑی رقم ہے اور وہ اسے جمع نہیں کر رہے ہیں۔عرضی میں یہ اپیل کی گئی تھی کہ کن کمپنیوں کے ذمہ کتنا لون ہے۔

      First published: