ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

انٹرنیٹ بند کئے جانے کو غیر قانونی قرار دینے سے متعلق عرضی سپریم کورٹ میں دائر

وکیل احتشام ہاشمی نے عرضی دائر کرکے کہا ہے کہ ملک بھر میں انٹرنیٹ بند کرنے کو آئین کے آرٹیکل 19 اور آرٹیکل 21 کی خلاف ورزی کے طور پر قرار دیا جانا چاہئے اور اس طرح اسے غیر آئینی اور غیر قانونی قرار دیا جانا چاہئے۔

  • Share this:
انٹرنیٹ بند کئے جانے کو غیر قانونی قرار دینے سے متعلق عرضی سپریم کورٹ میں دائر
سپریم کورٹ: فائل فوٹو

ملک میں انٹرنیٹ کو بند کرنے کو غیر آئینی قرار دینے سے متعلق ایک عرضی جمعہ کو سپریم کورٹ میں دائر کی گئی۔ وکیل احتشام ہاشمی نے عرضی دائر کرکے کہا ہے کہ ملک بھر میں انٹرنیٹ بند کرنے کو آئین کے آرٹیکل 19 اور آرٹیکل 21 کی خلاف ورزی کے طور پر قرار دیا جانا چاہئے اور اس طرح اسے غیر آئینی اور غیر قانونی قرار دیا جانا چاہئے۔


عرضی میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت مواصلاتی خدمات کی عارضی معطلی کے تحت سرکاری حکام کی طرف سے ’ من مانے طریقے سے انٹرنیٹ بند کرنے ‘ کو روکنے کے لئے ہدایات جاری کرے ۔ملک کے مختلف حصوں میں انٹرنیٹ اور مواصلاتی خدمات کو معطل کرنے کے حکومت کے اقدام پر عرضی گزار نے سوال اٹھائے ہے۔

First published: Jan 17, 2020 03:17 PM IST