ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

’’ حکومت کو شاہین باغ مظاہرین کے سامنے جھکنا ہی ہوگا‘‘

سپریم کورٹ کے مشہور وکیل نے مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر حکومت آپ کو بات کے لئے بلائے تو آپ وہاں جانے کے بجائے یہاں آنے کو کہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی تیاری آپ کے پاس ہونی چاہئے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 06, 2020 11:27 AM IST
  • Share this:
’’ حکومت کو شاہین باغ مظاہرین کے سامنے جھکنا ہی ہوگا‘‘
سی اے اے کے خلاف شاہین باغ میں احتجاج: فائل فوٹو

نئی دہلی۔ قومی شہریت (ترمیمی) قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ میں جاری مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے سپریم کورٹ کے مشہور وکیل بھانو پرتاپ سنگھ نے خاتون مظاہرین سے استقلال کے ساتھ قائم رہنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو شاہین باغ مظاہرین کے سامنے جھکنا ہی ہوگا۔


انہوں نے ڈرے سہمے اور خوف زدہ ہوئے بغیر مظاہرہ جاری رکھنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ حکومت مختلف حربے اپنائے گی اور اپنا رہی ہے لیکن آپ کو اپنے موقف سے نہیں ہٹنا ہے۔ انہوں نے مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر حکومت آپ کو بات کے لئے بلائے تو آپ وہاں جانے کے بجائے یہاں آنے کو کہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی تیاری آپ کے پاس ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ آپ کا یہ مظاہرہ کامیابی کی طرف جارہا ہے اس کو کسی حالت میں بھی پٹری سے اترنے نہ دیں۔


فائل فوٹو


دریں اثناء پولیس کی رکاوٹوں کے باوجود خاتون مظاہرین کی حمایت اور ان سے اظہار یکجہتی کے لئے پنجاب سے سکھوں کے جتھہ کی آمد کا سلسلہ جاری ہے۔ بٹالہ سمیت پنجاب کے کئی علاقوں سے آنے والے سکھوں نے قومی شہریت (ترمیمی) قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف ناراضگی ظاہر کی اور اسے واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم حکومت کے منصوبے کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہاکہ یہ قانون صرف مسلمانوں کے خلاف نہیں ہے بلکہ تمام کمزور طبقوں، دلتوں اور قبائلیوں کے خلاف ہے اور حکومت صرف تین ملکوں کا نام لیکر لوگوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کررہی ہے۔
First published: Feb 06, 2020 11:27 AM IST