ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بابری مسجد معاملے کی سماعت آج، مسلم فریقوں کی طرف سے سینئروکلا بحث کے لئے تیار

آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ اورجمعیۃ علما ہند نے کہا ہے کہ عدالت عظمیٰ اس معاملے کو انتہائی اہمیت دے رہی ہے، ہمیں انصاف ملنے کی مکمل امید ہے۔

  • Share this:
بابری مسجد معاملے کی سماعت آج، مسلم فریقوں کی طرف سے سینئروکلا بحث کے لئے تیار
آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ اورجمعیۃ علما ہند نے کہا ہے کہ عدالت عظمیٰ اس معاملے کو انتہائی اہمیت دے رہی ہے، ہمیں انصاف ملنے کی مکمل امید ہے۔

نئی دہلی:  بابری مسجد - رام مندرمعاملے پرسماعت آج 10 جنوری کو صبح 10 بجے ہوگی۔ جس کی سماعت کے لئے مسلم فریقوں کی طرف اہم اورسینئر وکلا پوری طرح سے تیار ہیں۔ دراصل سپریم کورٹ میں مسلم فریقوں کی طرف سے اس معاملے کی سینئر وکلا پیروی کررہے ہیں۔


سماعت سے قبل آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے جنرل سکریٹری مولانا محمد ولی رحمانی، بورڈ کی بابری مسجد کمیٹی کے کو کنوینر ڈاکٹر قاسم رسول الیاس اورجمعیۃ علما ہند نے کہا ہے کہ ہمارے وکلا سپریم کورٹ میں پوری تیاری کے ساتھ بحث کرنے کے لئے تیارہیں۔ واضح رہے کہ اس معاملے کی سماعت چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی قیادت والی پانچ رکنی بینچ کرے گی۔


اس سے قبل 4 جنوری بروز جمعہ کو سماعت کے دوران سپریم کورٹ میں بینچ کی تشکیل نہیں ہوپائی تھی۔ عدالت نے بینچ کی تشکیل کیلئے 10 جنوری کی تاریخ طے کردی تھی۔ اس روز صرف 60 سیکنڈ تک ہی اس معاملہ کی سماعت ہوسکی تھی۔ بتادیں کہ یہ معاملہ چیف جسٹس آف انڈیا رنجن گوگوئی اورجسٹس سنجے کشن کول کی بینچ کے سامنے لسٹیڈ ہے۔


اس کے بعد 8 جنوری کو بابری مسجد - رام مندرمعاملے پرسماعت کے لئے پانچ ججوں کی بینچ تشکیل کی گئی ہے۔ اس آئینی بینچ میں جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس ایس اے بوڑے، این وی رمنا، یویوللت اورڈی وائی چندرچوڑہیں۔ گزشتہ سماعت کے دوران چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا تھا کہ تین ججوں کی بینچ اس کی سماعت کرے گی، لیکن اب اس بینچ میں پانچ جج ہوں گے۔ واضح رہے کہ الہ آباد ہائی کورٹ کے ستمبر2010 کے فیصلے کے خلاف داخل 14 اپیل سپریم کورٹ میں داخل کی گئی ہے۔
First published: Jan 10, 2019 12:07 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading