ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مہاراشٹر: فڑنویس کی حلف برداری کوعدالت عظمی میں چیلنج، صبح 11:30 بجے ہوگی سماعت

ایک آرٹی آئی لگا کرمہاراشٹرکے راج بھون کے جمعہ دوپہر تین بجے سے ہفتہ کی صبح 8 بجے تک کے ریکارڈ مانگےگئے ہیں۔ آرٹی آئی میں اس دوران راج بھون آنے والے لوگوں اورگاڑیوں کی فہرست بھی مانگی گئی ہے۔

  • Share this:
مہاراشٹر: فڑنویس کی حلف برداری کوعدالت عظمی میں چیلنج، صبح 11:30 بجے ہوگی سماعت
مہاراشٹرمیں بی جے پی کی حکومت سازی پر سپریم کورٹ میں سماعت

نئی دہلی : مہاراشٹرا میں تیزی سے بدلتے ہوئے سیاسی واقعات کے درمیان  سابق وزیراعلیٰ دیویندرفڑنویس کی سربراہی میں حکومت سازی کا معاملہ آج عدالت عظمیٰ کی دہلیزپرپہنچا۔ جس کی سماعت اتوارکی صبح 11: بجے طے کی گئی ہے۔ شیوسینا، نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) اورکانگریس کی تینوں نے مشترکہ طورپر گذشتہ شام دیرسے یہ عرضی داخل کی اور اس میں مرکزی حکومت، مہاراشٹرحکومت، دیویندر فڑنویس اوراین سی پی کے رہنما اجیت پوارکو مدعاعلیہ بنایا ہے۔  وہیں دوسری جانب ایک آرٹی آئی لگا کرمہاراشٹرکے راج بھون کے جمعہ دوپہر تین بجے سے ہفتہ کی صبح 8 بجے تک کے ریکارڈ مانگے گئے ہیں۔ آرٹی آئی میں اس دوران راج بھون آنے والے لوگوں کی فہرست مانگی گئی ہے۔ ساتھ ہی راج بھون میں آنے والی گاڑیوں کی بھی تفصیلات طلب کی گئی ہیں۔


درخواست گزار کی یہ کوشش تھی کہ عدالت رات کومعاملےکی  فوری سماعت کرے ، لیکن اس کے بارے میں سپریم کورٹ نے کل صبح 11:30 بجے سماعت کا فیصلہ کیا ہے۔ درخواست میں عدالت عظمی سے استدعا کی گئی ہے کہ وہ ریاستی گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کے فڑنویس کوحکومت سازی کی دعوت کوغیرآئینی، آمرانہ، غیرقانونی اورآئین کی دفعہ 14 کی خلاف ورزی کے قراردینےکی عدالت سے گزارش کی۔ درخواست گزاروں نے شیوسینا، این سی پی اورکانگریس اتحاد ’مہا وکاس اگاڑی‘ کو حکومت بنانے کےلئے مدعو کرنےکے لئےگورنرکوہدایت دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔


درخواست گزاروں کا دعوی ہے کہ شیوسینا کے رہنما ادھو ٹھاکرے کی زیرقیادت اتحاد، مہاوکاس اگاڑی کو 144 سے زیادہ ارکان اسمبلی کی حمایت حاصل ہے۔ جبکہ فڑنویس حکومت اکثریت سے بہت پیچھے ہے۔ حالانکہ یہ بھی اطلاع ہےکہ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ایس اے بوبڈے اہل خانہ کے ہمراہ، دوروزہ تیروپتی کےدورے پرہیں اورکل دیرشام تک دہلی واپس آنے والے ہیں۔


شیوسینا، این سی پی اورکانگریس کے وکیل دیودت کامت نے بتایا کہ عرضی داخل کی جاچکی ہے۔ ہم نے دیویندرفڑنویس کووزیراعلیٰ نامزد کئے جانے کوغیرقانونی قراردیتے ہوئے مہاراشٹرمیں کل ہی فلورٹسٹ کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ سپریم کورٹ پورے معاملے میں دخل دے اور24 گھنٹے کے اندرکرناٹک کی طرح ہی فلور ٹسٹ کروائے۔

واضح رہے کہ آج صبح 8 بجے دیویندرفڑنویس نے وزیراعلیٰ اوراجیت پوارنے نائب وزیر اعلیٰ کے طورپرحلف لیا تھا، جس کے بعد سے مہاراشٹرمیں ہنگامہ مچ گیا تھا۔ آج پورے دن مہاراشٹرمیں بھونچال سارہا ہے۔ کانگریس، این سی پی اورشیوسینا کے لیڈروں کی میٹنگ ہوئی۔ این سی پی کے 54 میں سے 50 اراکین اسمبلی شرد پوارکی میٹنگ میں پہنچے۔ اس طرح سےاجیت پوارکا گروپ کمزورپڑ گیا ہے۔ شیو سینا سربراہ نے بھی اپنے اراکین اسمبلی کوصبرکرنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت ہم ہی بنائیں گے۔
First published: Nov 23, 2019 11:00 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading