خواتین پہلوانوں کے جنسی ہراسانی کے الزام پر سپریم کورٹ میں دہلی پولیس نے کہا- 'رکن پارلیمان پر ایف آئی آر سے پہلے جانچ کی ضرورت'

ہندوستانی ریسلرز کا بی جے پی رہنما پر جنسی ہراسانی کا الزام

ہندوستانی ریسلرز کا بی جے پی رہنما پر جنسی ہراسانی کا الزام

Wrestlers Protest: چیف جسٹس آف انڈیا ڈی وائی چندر چوڑ اور جسٹس پی ایس نرسمہا کی بنچ کو دہلی پولیس کی طرف سے پیش ہوئے سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے بتایا کہ اگر سپریم کورٹ کو لگتا ہے کہ سیدھے ایف آئی آر درج کی جانی چاہیے تو ایسا کیا جا سکتا ہے۔

  • News18 Urdu
  • Last Updated :
  • New Delhi, India
  • Share this:
    نئی دہلی: دہلی پولیس نے بدھ کے روز سپریم کورٹ میں کہا کہ ریسلنگ فیڈریشن آف انڈیا (ڈبلیو ایف آئی) کے صدر برج بھوشن شرن سنگھ کے خلاف سات خواتین پہلوانوں کی طرف سے لگائے گئے جنسی ہراسانی کے الزامات پر ایف آئی آر درج کرنے سے پہلے جانچ کی ضرورت ہے۔ چیف جسٹس آف انڈیا (CJI) ڈی وائی چندر چوڑ اور جسٹس پی ایس نرسمہا کی بنچ کو دہلی پولیس کی طرف سے پیش ہوئے سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے بتایا کہ اگر سپریم کورٹ کو لگتا ہے کہ سیدھے ایف آئی آر درج کی جانی چاہیے تو ایسا کیا جا سکتا ہے۔

    سالیسٹر جنرل نے کہا کہ ’’پہلی نظر سے ایسا لگتا ہے کہ ایف آئی آر درج کرنے سے پہلے ابتدائی جانچ کی ضرورت ہے۔‘‘ بنچ نے مہتا کی عرضیوں کا نوٹس لیا اور کہا کہ دہلی پولیس 28 اپریل کو پہلوانوں کی عرضی پر سماعت کے دوران ایف آئی آر کے اندراج کے بارے میں اپنے خیالات پیش کر سکتی ہے۔

    عتیق احمد نے امیش پال کو کیوں مارا؟ 11 سال پہلے اکھلیش حکومت کو لکھا گیا خط منظر عام پر آیا

    گریٹر نوئیڈا کی گوڑ سٹی میں لگی آگ، کئی فلیٹ آگ کی زد میں، افراتفری کا ماحول

    سپریم کورٹ نے منگل کو سات خواتین پہلوانوں کی عرضیوں پر دہلی پولیس اور دیگر کو نوٹس جاری کیا تھا۔ خواتین پہلوانوں کی طرف سے لگائے گئے جنسی ہراسانی کے الزامات کو 'سنگین' قرار دیتے ہوئے عدالت نے کہا تھا کہ اسے (عدالت) کو اس پر غور کرنے کی ضرورت ہے۔ پہلوانوں نے دعویٰ کیا کہ برج بھوشن شرن سنگھ اور ان کے قریبی ساتھیوں کی جانب سے کئی مواقع پر جنسی، جذباتی، ذہنی اور جسمانی طور پر ہراساں کیے جانے کے بعد، انہوں نے (پہلوانوں) نے ایسی حرکتوں کے خلاف آواز اٹھانے اور ان کے خلاف مناسب کارروائی کرنے کی ہمت پیدا کی۔ وہ جنتر منتر پر کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج پر بیٹھ گئے۔

    کئی قومی ایوارڈ یافتہ پہلوان یہاں جنتر منتر پر احتجاج کر رہے ہیں، اور حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ برج بھوشن شرن سنگھ کے خلاف جنسی ہراسانی کے الزامات کی جانچ کرنے والی کمیٹی کی رپورٹ کو عام کیا جائے۔ کئی سیاسی جماعتوں نے مظاہرے کی حمایت کی ہے۔ کانگریس سے لے کر عام آدمی پارٹی اور سی پی ایم نے اس مظاہرے کو اپنی حمایت دی ہے۔
    Published by:sibghatullah
    First published: