ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہندستانی سفارتخانوں کے مشورہ پر غیرمقیم ہندستانیوں سے دھیان دینے کی سشما سوراج کی اپیل

نئی دہلی: وزیر خارجہ سشما سوراج نے غیرمقیم ہندستانیوں سے آج اپیل کی کہ وہ بیرون ملک اپنی رہائش کے دوران کسی خطرہ سے بچنے کیلئے ہندستانی سفارتخانوں اور قونصل خانوں کی جانب سے جاری مشورہ پر ضرور عمل کریں اور روزگار کیلئے بیرون ملک جانے والے لوگ رجسٹرڈ ایجنٹ کے توسط سے ہی جائیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 09, 2016 08:59 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ہندستانی سفارتخانوں کے مشورہ پر غیرمقیم ہندستانیوں سے دھیان دینے کی سشما سوراج کی اپیل
نئی دہلی: وزیر خارجہ سشما سوراج نے غیرمقیم ہندستانیوں سے آج اپیل کی کہ وہ بیرون ملک اپنی رہائش کے دوران کسی خطرہ سے بچنے کیلئے ہندستانی سفارتخانوں اور قونصل خانوں کی جانب سے جاری مشورہ پر ضرور عمل کریں اور روزگار کیلئے بیرون ملک جانے والے لوگ رجسٹرڈ ایجنٹ کے توسط سے ہی جائیں۔

نئی دہلی: وزیر خارجہ سشما سوراج نے غیرمقیم ہندستانیوں سے آج اپیل کی کہ وہ بیرون ملک اپنی رہائش کے دوران کسی خطرہ سے بچنے کیلئے ہندستانی سفارتخانوں اور قونصل خانوں کی جانب سے جاری مشورہ پر ضرور عمل کریں اور روزگار کیلئے بیرون ملک جانے والے لوگ رجسٹرڈ ایجنٹ کے توسط سے ہی جائیں۔


محترمہ سوراج نے آج یہاں 14 ویں غیرمقیم ہندستانی تقریب میں اپنے خطاب اور بعد میں بیرون ملک سفارتخانوں اور قونصل خانوں میں موجود غیرمقیم اور ہند نژاد برادری کے افراد سے بات چیت کے دوران یہ اپیل کی۔


مسٹر سوراج نے کہاکہ ملک میں نئی حکومت بننے کے بعد بیرون ملک رہنے والی ہندستانی برادری سے قربت میں اضافہ ہوا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی اپنے ہر غیرملکی دورہ میں خود ہندستانی برادری کے لوگوں سے ملاقات کرتے ہیں، ان کے مسائل سنتے ہیں اور واپس آ کر ان کا حل تلاش کرنے کی کارروائی کرتے ہے۔


وزیر خارجہ نے کہاکہ اس سے غیرمقیم اور ہند نژاد براردی کے من میں ملک کے تئیں ایک نیا اعتماد پیدا ہوا ہے۔ حکومت نے غیرممالک میں مشکل میں پھنسے ہندستانیوں کی مدد کرنے کیلئےپہل کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ’حکومت تسلیم کرتی ہے کہ آپ ہمارے ہیں اور ہم آپ کے۔ آپ کو تحفظ فراہم کرنے کی ذمہ داری ہماری ہے۔ یہی جذبہ ہمیں آپ کی مدد کی ترغیب دیتا ہے‘۔


محترمہ سوراج نے کہاکہ اطلاعاتی وسائل نے دوریوں کو کم کردیا ہے۔ ایک ٹویٹ سے لوگوں کی مصیبتوں کا پتہ چل جا تا ہے اور ان کو کم از کم وقت میں مدد دی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ڈیڑھ سال میں یوکرین سے ایک ہزار، عراق سے ساڑھے سات ہزار، لیبیا سے ساڑھے تین ہزار، یمن سے ڈھائی ہزار غیرملکیوں سمیت سات ہزار افراد کو ہنگامی صورتحال میں نکالا گیا ہے۔


انہوں نے کہاکہ وہ بیرون ملک مقیم افراد سے اپیل کرنا چاہتی ہیں کہ وہ ہندستانی سفارتخانوں اور قونصل خانوں کی جانب سے جاری کی جانے والی ہدایات پر نظر رکھیں اور ان پر عمل کریں۔ خطرہ ہونے کی بات سامنے آتے ہی مشورہ کے مطابق اپنے وطن لوٹ آئیں اور حالات بہتر ہونے پر ہی واپس جائیں۔ انہوں نے کہاکہ مشورہ کو نظرانداز کرنے کی صورت میں انجام خطرناک ہوسکتا ہے۔ ان کی جان خطرے میں پڑتی ہے تو ان کے کنبہ کو دکھ ہوتا ہے۔ انہوں نے لیبیا میں تین ہندستانیوں کے اغوا کے واقعہ کی مثال پیش کرتے ہوئے کہا ’جان پیسے سے زیادہ پیاری ہوتی ہے‘۔


محترمہ سوراج نے غیرمقیم اور ہند نژاد برادریوں سے یہ بھی اپیل کی کہ وہ ہندستان کی ترقی کے بڑے پروگرام جیسے ڈجیٹل انڈیا، اسکل انڈیا اور میک ان انڈیا میں تعاون کریں۔ اس کے ساتھ ہی صحت مند اسکول، صاف ستھرے ہندستان اور نمامی گنگے پروجیکٹوں میں تعاون کریں۔انہوں نے کہاکہ غیرمقیم ہندستانی اپنے آبائی گاؤں اور اسکول میں بیت الخلاء بنوانے میں مدد کریں۔ اس طرح وہ ’ماٹی کا قرض‘ ادا کرسکتے ہیں۔


انہوں نے غیرممالک میں ہندستانی برادری کے تعاون کی ستائش کرتے ہوئے کہاکہ بہت سے لوگ مختلف ممالک میں بڑی کمپنیوں کے سربراہ بنے، کئی سیاست داں بنے، بہت سے لوگوں نے صنعت کاری میں نام کمایا لیکن عام ہندستانیوں نے بھی بہتر پڑوسی ہونے، محنتی اور قانون پسند ہونے کی خوبیوں سے بھی دنیا کا دل جیت لیا ہے۔ اس طرح سے وہ غیرممالک میں ہندستان کے غیررسمی سفارت کار کے طور پر ملک کے وقار میں اضافہ کر رہے ہیں۔

First published: Jan 09, 2016 08:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading