உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    چارہ روزہ دوے پر وزیر خارجہ سشما سوراج فلسطین اور اسرائیل کیلئے روانہ

    نئی دہلی : وزیر خارجہ سشما سوراج فلسطین اور اسرائیل کے سہ روزہ دورے پر آج روانہ ہو گئیں۔ وزیر خارجہ کے ساتھ ایک وفد بھی گیا ہے جس میں خارجہ سکریٹری (سابق) کے علاوہ وزارت خارجہ کے سینئر حکام شامل ہیں۔

    نئی دہلی : وزیر خارجہ سشما سوراج فلسطین اور اسرائیل کے سہ روزہ دورے پر آج روانہ ہو گئیں۔ وزیر خارجہ کے ساتھ ایک وفد بھی گیا ہے جس میں خارجہ سکریٹری (سابق) کے علاوہ وزارت خارجہ کے سینئر حکام شامل ہیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی : وزیر خارجہ سشما سوراج فلسطین اور اسرائیل کے چار روزہ دورے پر آج روانہ ہو گئیں۔ وزیر خارجہ کے ساتھ ایک وفد بھی گیا ہے جس میں خارجہ سکریٹری (سابق) کے علاوہ وزارت خارجہ کے سینئر حکام شامل ہیں۔


      محترمہ سوراج کا یہ دورہ وزیر اعظم نریندر مودی کے اس سال مجوزہ اسرائیل کے دورہ کی تیاری کے سلسلے میں ہو رہا ہے۔ گزشتہ سال اکتوبر میں صدر پرنب مکھرجی کے فلسطین اور اسرائیل کے دورے کے بعد وزیر خارجہ کاوہاں کا یہ پہلا دورہ ہے۔


      سرکاری ذرائع کے مطابق محترمہ سوراج آج دیر رات رملہ پہنچیں گی اور کل شام کو ہی تل ابیب پهنچیں گي۔ وہ اپنے سرکاری دورے کے دوران ان ممالک کے ساتھ ہندوستان کے دو طرفہ تعلقات کے تمام پہلوؤں پر وہاں کے رہنماؤں سے تبادلہ خیال کریں گی۔


      محترمہ سوراج کے دورے سے ہند۔فلسطین دو طرفہ تعلقات مزید مضبوط ہونے کے ساتھ ایک آزاد اور خود مختار فلسطینی قوم کے تئیں ہندستان کے سیاسی، سفارتی اور ترقیاتی حمایت مضبوط ہوگی۔ وہ رملہ میں ہندستان کے تعاون سے تعمیرکردہ فلسطینی ڈیجیٹل لرننگ اینڈ انوویشن سینٹر کا افتتاح بھی كریں گي۔ ہندستان فلسطین میں تعلیم، انسانی وسائل کی ترقی اور صلاحیت سازی میں مدد کر رہا ہے۔


      تل ابیب میں محترمہ سوراج کی اسرائیل کے صدر، وزیر اعظم، وزیر خارجہ، وزیر دفاع، قومی بنیادی ڈھانچے کی ترقی کے وزیر، وزیر توانائی اور آبی وسائل کے وزیر سے ملاقات ہوگی۔ وہ وہاں کے حزب اختلاف کے رہنما، اسرائیلی پارلیمنٹ نیسٹ کے صدر اور ہندستانی یہودی برادری سے بھی ملاقات کریں گی۔ ان کے اس دورے سے دونوں ممالک کے تعلقات مزید مضبوط ہونے کی امید ہے۔ دونوں ملک جمہوریت اور آزاد منڈی کی معیشت میں یقین رکھتے ہیں۔ زراعت، سائنس اور ٹیکنالوجی اور تعلیم کے میدان میں دونوں ممالک کے گہرے تعلق رہے ہیں۔

      First published: