ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سشما نے عراق میں تین سال پہلے اغوا 39 ہندوستانیوں کی موت کی تصدیق کر دی

نئی دہلی۔ عراق میں اغوا 39 ہندوستانی شہری مار دئیے گئے ہیں۔ وزیر خارجہ سشما سوراج نے اس بات کی تصدیق کر دی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 20, 2018 02:48 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سشما نے عراق میں تین سال پہلے اغوا 39 ہندوستانیوں کی موت کی تصدیق کر دی
سوراج نے راجیہ سبھا میں اپنے بیان میں کہا کہ سبھی باقیات کی ڈی این اے جانچ سے کل اس بات کی تصدیق ہوگئی ہے کہ ساڑھے تین سال سے لاپتہ 39 ہندوستانیوں کی موت ہو چکی ہے۔: فوٹو، یو این آئی۔

نئی دہلی۔  وزیر خارجہ سشما سوراج نے آج پارلیمنٹ کو مطلع کیا کہ عراق کے موصل سے اگست 2014 میں اغوا 39 ہندوستانیوں کی موت ہو چکی ہے اور حکومت ان کے باقیات کو لائے گی۔  سوراج نے راجیہ سبھا میں اپنے بیان میں کہا کہ سبھی باقیات کی ڈی این اے جانچ سے کل اس بات کی تصدیق ہوگئی ہے کہ ساڑھے تین سال سے لاپتہ 39 ہندوستانیوں کی موت ہو چکی ہے۔ مرنے والوں میں 31 پنجاب، چار ہماچل پردیش اور باقی بہار اور مغربی بنگال کے تھے۔


انہوں نے کہا کہ وزیر مملکت جنرل وی کے سنگھ عراق جائیں گے اور مرنے والوں کے باقیات کو طیارے سے وطن لائیں گے۔ یہ طیارہ سب سے پہلے امرتسر جائے گا جہاں پنجاب اور ہماچل پردیش کے لوگوں کے باقیات کو ان کے اہل خانہ کو سپرد کرے گا۔ اس کے بعد یہ طیارہ پٹنہ اور کولکاتہ جائے گا۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ لاپتہ ہندوستانیوں کا پتہ لگانے کا کام بہت پیچیدہ تھا لیکن یہ عراقی حکومت، وزیر اعظم نریندر مودی اور حکام کے تعاون سے ممکن ہو سکا ہے۔ انہوں نے اس کے لئے عراقی حکومت، نریندر مودی اور جنرل وی کے سنگھ کی ستائش کی۔


سشما نے کہا، "27 جولائی کو راجیہ سبھا میں بحث کے دوران میں نے کہا تھا کہ جب تک کوئی بھی ثبوت نہیں مل جاتا، میں ان کے قتل یا موت کا اعلان نہیں کروں گی۔ لیکن آج وہ وقت آ گیا ہے۔ ہرجيت مسی کی کہانی سچی نہیں تھی۔ "




First published: Mar 20, 2018 12:06 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading