உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ڈھاکہ دہشت گردانہ حملہ میں ماری گئی تارشی کی آخری رسوم آج گروگرام میں ادا کی جائے گی

    فیروز آباد۔  بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں ہائی سیکورٹی والے ڈپلومیٹک علاقے کے ایک مشہور ریستوران میں ہوئے گذشتہ جمعہ کو دہشت گرد انہ حملے میں مقتول ہندوستانی طالبہ تارشی جین کی آخری رسوم کی ادائیگی آج گروگرام (گرگاؤں) میں کی جائے گی۔

    فیروز آباد۔ بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں ہائی سیکورٹی والے ڈپلومیٹک علاقے کے ایک مشہور ریستوران میں ہوئے گذشتہ جمعہ کو دہشت گرد انہ حملے میں مقتول ہندوستانی طالبہ تارشی جین کی آخری رسوم کی ادائیگی آج گروگرام (گرگاؤں) میں کی جائے گی۔

    فیروز آباد۔ بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں ہائی سیکورٹی والے ڈپلومیٹک علاقے کے ایک مشہور ریستوران میں ہوئے گذشتہ جمعہ کو دہشت گرد انہ حملے میں مقتول ہندوستانی طالبہ تارشی جین کی آخری رسوم کی ادائیگی آج گروگرام (گرگاؤں) میں کی جائے گی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      فیروز آباد۔  بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں ہائی سیکورٹی والے ڈپلومیٹک علاقے کے ایک مشہور ریستوران میں ہوئے گذشتہ جمعہ کو دہشت گرد انہ حملے میں مقتول ہندوستانی طالبہ تارشی جین کی آخری رسوم کی ادائیگی آج گروگرام (گرگاؤں) میں کی جائے گی۔ خاندانی ذرائع نے یہاں بتایا کہ 19 سالہ تارشی جین کی لاش آج دہلی پہنچے گی۔ لاش دہلی پہنچنے کے بعد گروگرام میں اس کی آخری رسوم کی ادائیگی کی جائے گی۔ اس سے پہلے خاندانی ذرائع نے آخری رسومات کی ادائیگی فیروز آباد میں کرنے کی بات کہی تھی۔ تاریشی کے والد کا گرگاؤں میں بھی ایک مکان ہے۔


      تارشي کی موت کی خبر کے بعد سے فیروز آباد میں غم کا ماحول ہے۔ تارشي کے گھر ضلع مجسٹریٹ، پولیس سپرنٹنڈنٹ کے علاوہ بڑی تعداد میں سماجی اور سیاسی تنظیموں کے
      افراد تعزیت کا اظہار کرنے پہنچے۔ واضح رہے کہ ڈھاکہ کے پاش علاقے میں واقع ایک ریستوران میں یکم جولائی کی رات تارشي کھانا کھانے گئی تھی اور اسی دوران وہاں ہوئے دہشت گردانہ حملے میں جن میں 20 غیر ملکی شہریوں کا بے رحمی سے قتل کردیا گیا تھا ان میں فیروز آباد کی تارشي جین بھی شامل تھیں۔


      تارشي فیروز آباد کے ایک ممتاز جین خاندان کی بیٹی تھی۔ اس کے تاؤ راجیو جین اور چچا راکیش موہن، اجیت جین خاندان کے ساتھ یہاں رہتے ہیں۔

      First published: