ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کورونا مریضوں میں ٹی بی انفیکشن کے معاملات میں اضافہ ، حکومت نے جاری کی ایڈوائزری

TB Infection in Coronavirus Patients: وزارت کی جانب سے یہ ایڈوائزری ایسے وقت میں جاری کی گئی ہے جب کورونا سے متعلق پابندیوں کی وجہ سے ٹی بی کے معاملات میں تقریبا 25 فیصد کمی آئی ہے ۔

  • Share this:
کورونا مریضوں میں ٹی بی انفیکشن کے معاملات میں اضافہ ، حکومت نے جاری کی ایڈوائزری
کورونا مریضوں میں ٹی بی انفیکشن کے معاملات میں اضافہ ، حکومت نے جاری کی ایڈوائزری

نئی دہلی : ملک میں کورونا وائرس وبا کے دوران ٹی بی کے معاملات میں اضافہ کی رپورٹ کے درمیان مرکزی وزارت صحت نے ہفتہ کو سبھی کورونا پازیٹیو مریضوں کیلئے ٹی بی کی جانچ سے معتلق اپنی سفارش کا اعادہ کیا ہے ۔ وزارت نے کورونا سے متاثر مریضوں میں ٹی بی کے بڑھتے معاملات کی رپورٹ کے بعد ایڈوائزری جاری کی ہے ۔ آفیشیل بیان کے مطابق : یہ واضح کیا جاتا ہے کہ مرکزی وزرات صحت کے ذریعہ سبھی کورونا پازیٹیو مریضوں کیلئے ٹی بی کی جانچ اور ٹی بی سے شفایاب ہوئے سبھی مریضوں کیلئے کورونا کی جانچ کی سفارش کی گئی ہے ۔ اگست 2020 کی شروعات میں ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام خطوں کو بہتر نگرانی اور ٹی بی اور کورونا کے معاملات کو تلاش کرنے کی کوششوں میں تیزی لانے کیلئے کہا گیا تھا ۔


اس کے علاوہ حکومت نے مرکز کے زیر انتظام خطوں میں ٹی بی ۔ کورونا اور ٹی بی ۔ آئی ایل آئی / ایس اے آر آئی کی بائی ڈائریکشنل اسکریننگ کی ضرورت کو دوہرانے کیلئے کئی مشورے اور گائیڈنس جاری کئے ہیں ۔ وزارت کی جانب سے یہ ایڈوائزری ایسے وقت میں جاری کی گئی ہے جب کورونا سے متعلق پابندیوں کی وجہ سے ٹی بی کے معاملات میں تقریبا 25 فیصد کمی آئی ہے ۔ مرکز نے کہا کہ او پی ڈی سیٹنگس میں سنگین معاملات کی جانچ کے ساتھ ساتھ سبھی ریاستوں کے ذریعہ کمیونٹی میں ایکٹیو معاملات کی جانچ مہموں کے توسط سے اس اثر کوکم کرنے کیلئے خاص کوششیں کی جارہی ہیں ۔


حالانکہ سرکار نے واضح کیا ہے کہ یہ بتانے کیلئے کافی ثبوت نہیں ہیں کہ کورونا کی وجہ سے ٹی بی کے معاملات میں اضافہ ہوا ہے ۔ ٹی بی اور کورونا کی دوہری بیماری پر روشنی ڈالتے ہوئے وزارت صحت نے کہا کہ دونوں امراض کو انفیکشن مانا جاتا ہے اور یہ اہم طور پر پھیپھڑوں پر حملہ کرتے ہیں ۔ ان میں کھانسی ، بخار اور سانس لینے میں دشواری کی یکساں علامتیں سامنے آتی ہیں ۔ حالانکہ ٹی بی کی علامت سامنے آنے میں طویل عرصہ لگتا ہے اور بیماری کی شروعات دھیمی ہوتی ہے ۔


بلیک فنگس جیسے پوسٹ کووڈ امراض کے خلاف ایک وارننگ میں وزارت نے کہا کہ سارس کوو 2 کا انفیکشن ایک شخص کو ایکٹیو ٹی بی مرض ڈیولپ کرنے کیلئے زیادہ حساس بناسکتا ہے ، کیونکہ بلیک فنگس کی طرح ہی ٹی بی بھی ایسا انفیکشن ہے جو کمزور جسم پر حملہ کرتا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 17, 2021 07:55 PM IST