உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی میں لگے گا ملک کا پہلا اسماگ ٹاور ، فی سیکنڈ صاف ہوگی ایک ہزار کیوبیک میٹر ہوا

    دہلی میں لگے گا ملک کا پہلا اسماگ ٹاور ، فی سیکنڈ صاف ہوگی ایک ہزار کیوبیک میٹر ہوا

    دہلی میں لگے گا ملک کا پہلا اسماگ ٹاور ، فی سیکنڈ صاف ہوگی ایک ہزار کیوبیک میٹر ہوا

    کیجریوال حکومت آلودہ ہوا کو صاف کرنے کے لیے یہ اسموگ ٹاور پائلٹ بنیادوں پر قائم کر رہی ہے ۔ یہ اسموگ ٹاور ایک ہزار کیوبک میٹر ہوا فی سیکنڈ صاف کرے گا اور پی ایم -10 اور پی ایم -2.5 کی مقدار کو کم کرے گا ۔

    • Share this:
    نئی دہلی : وزیراعلی اروند کیجریوال دہلی میں آلودگی کو کم کرنے کے لیے 23 اگست کو کناٹ پلیس میں ملک کے پہلے اسموگ ٹاور کا افتتاح کریں گے ۔ کیجریوال حکومت آلودہ ہوا کو صاف کرنے کے لیے یہ اسموگ ٹاور پائلٹ بنیادوں پر قائم کر رہی ہے ۔ یہ اسموگ ٹاور ایک ہزار کیوبک میٹر ہوا فی سیکنڈ صاف کرے گا اور پی ایم -10 اور پی ایم -2.5 کی مقدار کو کم کرے گا ۔ ماہرین آلودگی کو کم کرنے میں اسموگ ٹاورز کے اثرات کا جائزہ لیں گے ۔ اگر نتیجہ سازگار نکلا تو دہلی کے دیگر مقامات پر بھی اسی طرح کے ٹاور لگائے جائیں گے ۔ دہلی کے وزیر ماحولیات گوپال رائے نے آج اسموگ ٹاور کی تعمیراتی جگہ کا معائنہ کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ دہلی کے وزیر ماحولیات گوپال رائے نے آج کناٹ پلیس ، بابا کھڑک سنگھ مارگ میں نصب ہونے والے ملک کے پہلے اسموگ ٹاور کی تعمیراتی جگہ کا دورہ کیا اور معائنہ کیا ۔

    وزیر ماحولیات گوپال رائے نے کہا کہ دہلی حکومت وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی قیادت میں پوری سنجیدگی کے ساتھ دہلی کے اندر آلودگی کے خلاف مسلسل کام کر رہی ہے۔ یہ ملک میں دارالحکومت میں نصب کیا جانے والا پہلا اسموگ ٹاور ہے۔ ایک اندازے کے مطابق یہ اسموگ ٹاور ایک ہزار کیوبک میٹر ہوا کو فی سیکنڈ صاف کرے گا ۔ اس کی مدد سے پی ایم -10 اور پی ایم 2.5 کی مقدار کو کم کیا جا سکتا ہے۔ اسموگ ٹاورز کا پوری دہلی کی آلودگی پر کیا اثر پڑتا ہے، یہ بہت اہمیت رکھتا ہے ، کیونکہ اگر ہم اس کی کامیابی کو اپنے حق میں پاتے ہیں، تو ہم اس طرح کے اسموگ ٹاورز کو دوسری جگہوں پر لگانے کا عمل شروع کرنے کے لیے آگے بڑھیں گے۔ اسموگ ٹاور جو تعمیر کیا جارہا ہے اس کا افتتاح دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال 23 اگست کو کریں گے۔ اس کے بعد ہمارے ماہرین اس ٹاور کی نگرانی کریں گے اور آلودگی کو کم کرنے میں اس کے اثرات کا جائزہ لیں گے اور جائزہ لیں گے اور اس کے مطابق حکومت کو رپورٹ کریں گے۔

    ایک سوال کے جواب میں وزیر ماحولیات گوپال رائے نے کہا کہ دہلی حکومت آلودگی کے خلاف پوری قوت کے ساتھ کام کر رہی ہے۔ چاہے وہ دھول آلودگی ہو، چاہے وہ گاڑیوں کی آلودگی کا مسئلہ اور اس کا حل ، حکومت ہر سطح پر کام کر رہی ہے۔  ہم اس کام میں تیزی لائیں گے۔ مجھے یقین ہے کہ یہ اسموگ ٹاور جو کہ پائلٹ بنیادوں پر شروع کیا جا رہا ہے ، آلودگی کو کم کرنے میں بہت آگے جائے گا۔ اس اسموگ ٹاور کی قیمت تقریبا 20 کروڑ روپے ہے۔ حکومت اس بات کا جائزہ لینے کے بعد فیصلہ کرے گی کہ دہلی میں مزید کتنے اسموگ ٹاور لگائے جائیں گے۔

    ایک اور سوال کے جواب میں وزیر ماحولیات نے کہا کہ فی الحال ہم یہ اسموگ ٹاور 23 اگست کو شروع کرنے والے ہیں ۔ چونکہ اب برسات کا موسم ہے۔ بارش کے بعد یہ اسموگ ٹاور اپنی پوری صلاحیت سے کام کرنا شروع کر دے گا ۔ اس کے بعد ڈی پی سی سی کے ہمارے سائنسدان اس کا جائزہ لیں گے اور حکومت کو ماہانہ رپورٹس دینا شروع کردیں گے۔  ہم آلودگی کو قریب سے مانیٹر کرنے کے لیے آئی آئی ٹی کانپور کے ساتھ بھی معاہدہ کریں گے۔ یہ فیصلہ دہلی کابینہ نے اس سلسلے میں لیا ہے ۔ تاکہ آلودگی کو زیادہ تیزی سے کنٹرول کیا جاسکے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: