உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آندھی طوفان  سے دہلی کی Jama Masjid کو پہنچے نقصان کی مرمت کیلئے آگے آیا دہلی وقف بورڈ

    دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین کا انٹیک کی ٹیم کے ساتھ جامع مسجد کا دورہ , تیز آندھی اور بارش کے بعد شاہی جامع مسجد کے بڑے گنبد کی برجی کو پہنچا تھا نقصان، ٹکنیکل ٹیم کے سروے کے بعدشروع کیا گیا مرمت کا کام  مکمل کیا جائے گا۔

    دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین کا انٹیک کی ٹیم کے ساتھ جامع مسجد کا دورہ , تیز آندھی اور بارش کے بعد شاہی جامع مسجد کے بڑے گنبد کی برجی کو پہنچا تھا نقصان، ٹکنیکل ٹیم کے سروے کے بعدشروع کیا گیا مرمت کا کام مکمل کیا جائے گا۔

    دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین کا انٹیک کی ٹیم کے ساتھ جامع مسجد کا دورہ , تیز آندھی اور بارش کے بعد شاہی جامع مسجد کے بڑے گنبد کی برجی کو پہنچا تھا نقصان، ٹکنیکل ٹیم کے سروے کے بعدشروع کیا گیا مرمت کا کام مکمل کیا جائے گا۔

    • Share this:
    نئی دہلی: تیز آندھی اور بارش کی وجہ سے تاریخی شاہی جامع مسجد کے بڑے گنبد کو کافی نقصان پہنچا ہے جسکی فوری مرمت کی ضرورت ہے اسی لیئے ماہرین کی نگرانی میںفوری طور پر مرمت کا کام شروع کردیا گیا ہے اور گری ہوئی برجی کو بڑے گنبد پر دوبارہ نصب کرنے کے لیئے ماہرین کی ٹیم تفصیلی سروے اور جائزہ کے بعد جلد ازجلد کام مکمل کرلیا جائے گا۔دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خاننے یہ باتیں شاہی جامع مسجد دہلی کا آج دورہ کرنے کے بعد کہیں ۔امانت اللہ خان نے آج بعد نماز ظہرنیشنل ٹرسٹ فار آرٹ اینڈ کلچر ہیریٹیج(انٹیک)اور دہلی وقف بورڈ کے افسران کی ایک ٹیم کے ساتھ جامع مسجد کا دورہ کیااور تیز آندھی اور بارش میں بڑے گنبد کی برجی کو ہوئے نقصان کا جائزہ لیا۔چیئرمین امانت اللہ خان کے ساتھ نیشنل ٹرسٹ فار آرٹ اینڈ کلچر ہیریٹیج(انٹیک) کی ڈائریکٹر بی جیا بھی موجود تھیں۔وقف بورڈ کے چیئرمین نے جامع مسجد کے شاہی امام سیداحمد بخاری سے ملاقات کرکے تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔اس دوران شاہی امام نے کل تیز آندھی اور بارش کے بعد جامع مسجد میں ہونے والے حادثہ سے وقف بورڈ کے چیئرمین کو باخبر کرایا۔

    شاہی امام کے مطابق کل تیز آندھی اور بارش میں کئی بڑے پتھر اپنی جگہ سے گرگئے اور بڑے گنبد کی کئی ٹن وزنی برجی تین حصوں میں تقسیم ہوگئی جس کے دو حصے نیچے گرگئے جبکہ ایک حصہ ابھی بھی گنبد پر جھول رہاہے اور اندیشہ ہے کہ کسی بھی وقت گر جائے گا جس سے پھر کسی انہونی کا قوی امکان ہے اس لیئے سر دست ترجیحی بنیادپر لٹکے ہوئے حصہ کو فوری طور پر اتارنے یا برجی کو مکمل طور پر دوبارہ نصب کرنے کی ضرورت ہے۔

    شاہی امام کی باتوں سے اتفاق کرتے ہوئے وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے کہا کہ جلد از جلد اس کام کو ترجیحی بنیاد پر مکمل کرلیا جائے گا۔غور طلب ہیکہ کل جیسے ہی دہلی میں تیز آندھی کے ساتھ بارش شروع ہوئی ویسے ہی جامع مسجد کے بیچ والے بڑے گنبد کی برجی کا کچھ حصہ الگ ہوکر زمین پر آگرا۔آج جب ماہرین کی ٹیم کے ساتھ جائے وقوعہ کا تفصیلی جائزہ لیا گیا تو یہ بات سامنے آئی کہ برجی ٹوٹ کر نہیں گری بلکہ برجی جو کہ کافی وزنی ہے وہ کئی حصوں میں لوہے کی ایک راڈ پر گنبد کے اوپر نصب تھی جس کے دو حصے زمین پر گر گئے اور اسکی وجہ سے پتھروں اور خود بھاری بھرکم برجی کو نقصان پہنچا۔

    حیرت انگیز طور پریہ بات بھی سامنے آئی کہ تاریخی شاہی مسجد کی گنبد پر نصب یہ برجی کسی ایک دھات کی بنی ہوئی نہیں ہے بلکہ کئی قیمتی دھاتوں کو ڈھال کر انھیں بنایا گیا ہے جس میں سونا بھی شامل ہے اور بنا ویلڈ کیئے یہ الگ الگ حصوں میں گنبد پر لگے لوہے کی ایک راڈ پر نصب تھیں۔سر دست ان برجیوں کی مرمت اور گنبد پر انھیں دوبارہ نصب کرنے کاکام شروع کردیا گیا ہے۔اور گنبد کے چاروں طرف پیڑیاں باندھی جارہی ہیں۔کل تیز آندھی اور بارش کے دوران وقف بورڈ کے سیکشن افسر حافظ محفوظ محمد کو جیسے ہی اس واقعہ کی اطلاع ملی انہوں نے جائے وقوعہ کے معائنہ کے لیئے وقف بورڈ سے انجینئروں کی ایک ٹیم بھیجی اور آج چیئرمین دہلی وقف بورڈ بذات خود ماہرین کی ایک ٹیم کے ساتھ معائنہ کرنے کے لیئے جامع مسجد پہنچے۔

    آندھرا کی خواتین نے کشمیر میں دیا ماحولیاتی تحفظ کا پیغام، Dal Lake کی صفائی میں لیا حصہ 

    اسپتال پہنچے مشہور سنگر KK کے سر پر تھے چوٹ کے نشان، کولکاتہ پولیس نے درج کیا معاملہ

    یہ بھی قابل غور ہے کہ جامع مسجد کافی عرصہ سے خستہ حالی کی شکار ہے اور ماضی قریب میں کئی بڑے پتھر اپنی جگہ چھوڑ چکے ہیں اور کئی مرتبہ ان کا کچھ حصہ صحن میں بھی آکر گرا ہے ۔ ان سب باتوں کو لیکر شاہی امام سید احمد بخاری نے گزشتہ دنوں محکمہ آثار قدیمہ سے لیکر حکومت ہند کو کئی مرتبہ خطوط ارسال کیئے اور کئی ممبران پارلیمنٹ نے جامع مسجد کی خستہ حالی اور تزئین و مرمت کا معاملہ پارلیمینٹ میں بھی اٹھایا تاہم حکومت کی طرف سے کسی طرح کی یقین دہانی نا کرائے جانے کے بعد دہلی وقف بورڈ نے اس معاملہ کو اپنے ہاتھ میں لیااور بورڈ چیئرمین امانت اللہ خان کی ذاتی دلچسپی اور کوششوں سے ابتدائی مرحلہ کے کئی معائنے اور سروے کے بعدماہرین سے تفصیلی موقع معائنہ کرایا گیاجس کے بعد پوری جامع مسجد کی جامع تزئین کاری اور مرمت کی ذمہ داری نیشنل ٹرسٹ فار آرٹ اینڈ کلچر ہیریٹیج(انٹیک)کو دیدی گئی ہے جس پر تقریبا50کروڑ کی لاگت آنے کا تخمینہ ہے اور اندازہ یہ ہے کہ صحیح طریقہ سے مرمت اور تزئین کاری میں کم ازکم تین سال کا عرصہ لگ جائے گا۔وقف بورڈ کے افسران کے مطابق جلد ہی اس منصوبہ پر عمل شروع ہوجائے گا۔آج چیئرمین امانت اللہ خان کے ساتھ جائے وقوعہ کا معائنہ کرتے وقت نیشنل ٹرسٹ فار آرٹ اینڈ کلچر ہیریٹیج(انٹیک)کی ڈائریکٹر بی جیا،وقف بورڈ کے سیکشن افسر حافظ محفوظ محمد، سماجی کارکن حافظ جاوید اور نائب شاہی امام سید شعبان بخاری کے علاوہ وقف بورڈ کے انجینئروں کی ایک ٹیم موجود تھی۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: