உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Azadi ka Amrit Mahotsav: آزادی کا امرت مہوتسو اور ہماری ذمہ داریاں 

    ہوا اجالا تو ہم ان کے نام بھول گئے جو بجھ گئے ہیں چراغوں کی لو بڑھاتے ہوئے جشن آزادی مناتے ہوئے ان لوگوں کو خراجِ عقیدت اور خراجِ تحسین پیش کرنا ہمارا خوشگوار فریضہ ہے  جنہوں نے اس ملک کی شان ، عظمت اور وقار کو بچانے کے لئے اپنی زندگیوں کے نذرانے پیش کئے۔

    ہوا اجالا تو ہم ان کے نام بھول گئے جو بجھ گئے ہیں چراغوں کی لو بڑھاتے ہوئے جشن آزادی مناتے ہوئے ان لوگوں کو خراجِ عقیدت اور خراجِ تحسین پیش کرنا ہمارا خوشگوار فریضہ ہے جنہوں نے اس ملک کی شان ، عظمت اور وقار کو بچانے کے لئے اپنی زندگیوں کے نذرانے پیش کئے۔

    ہوا اجالا تو ہم ان کے نام بھول گئے جو بجھ گئے ہیں چراغوں کی لو بڑھاتے ہوئے جشن آزادی مناتے ہوئے ان لوگوں کو خراجِ عقیدت اور خراجِ تحسین پیش کرنا ہمارا خوشگوار فریضہ ہے جنہوں نے اس ملک کی شان ، عظمت اور وقار کو بچانے کے لئے اپنی زندگیوں کے نذرانے پیش کئے۔

    • Share this:
    آزادی ایک ایسی نعمت ہے جس کا کوئی دوسرا نعم البدل نہیں۔ ایک انسان کے پاس دنیا کی تمام آسائشیں موجود ہوں اور اس کے پاس آزادی سے جتنے اور کھلی ہوا میں سانس لےنے کا حق نہ ہو تو اس کے دل و دماغ پر کیا گزرتی ہے اس سے ہم اور آپ بخوبی واقف ہیں ۔ ہوا اجالا تو ہم ان کے نام بھول گئے جو بجھ گئے ہیں چراغوں کی لو بڑھاتے ہوئے جشن آزادی مناتے ہوئے ان لوگوں کو خراجِ عقیدت اور خراجِ تحسین پیش کرنا ہمارا خوشگوار فریضہ ہے جنہوں نے ہمارے ملک کو آزاد کرانے کے لیے ہر طرح کی قربانیاں پیش کیں انتہا تو یہ ہے کہ اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرتے ہوئے جامِ شہادت پی لئے ،اس ملک کی مٹی کی عزت و عظمت کے لئے اپنا سب کچھ قربان کرکے خود بھی قربان ہوگئے۔ اس بار ہم ۷۵ ویں یوم ِ آزادی کو آزادی کے امرت مہوتسو کی شکل میں منارہے ہیں ۔

    ہر گھر ترنگا اور گھر گھر ترنگا جیسی مہموں اور دیگر اہم تحریکات کے ذریعے لوگوں کو آزادی کا احساس بھی کرایا جارہا ہے اور انہیں یہ پیغامات بھی دئے جارہے ہیں کہ ہم اپنے قومی تہوار کو کس طرح منائیں ، کون سے کام کریں اور کن تحریکات کے ذریعے ملک اور معاشرے کو مزید مستحکم اور خوبصورت بنائیں۔ مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی جانب سے بالخصوص ملک کے وزیر اعظم نریندر مودی کی ایما پر آزادی کا امرت مہوتسو منانے اور ہر گھر پر ترنگا لہرائے جانے سے متعلقہ جو احکامات دئے گئے ہیں ان کو لےکر بھی تمام ادارے اور سبھی لوگ نہایت سنجیدہ اور پُرجوش ہیں ۔

    معروف ماہر تعلیم ، سماجی و علمی خدمت گار اور لکھنئو واقع انٹیگرل یونیورسٹی کے بانی اور چانسلر سید وسیم اختر نے اس مشن کو کامیاب بنانے کے لیے ادارے کے ذمہداران کو ضروری ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ آزادی کی یہ نعمت بڑی اہم قربانیوں کے بعد نصیب ہوئ ہے بات چاہے علماء کرام اور دیگر مجاہدین آزادی کے ذریعے پیش کی جانے والی قربانیوں کی ہو یا ان کے ذریعے چلائی جانے والی تحریکوں کی آج ہمیں ماضی کے اجالوں سے روشنی کشید کرکے نئی سحر کے امکان روشن کرنے ہیں ہر گھر پر ترنگا لہرا کر لوگوں کے حب الوطنی کے جذبوں کو مزید بیدار کرنا ہے ساتھ ہی اپنے ملک کی ترقی خوشحالی اور حفاظت کے عہد کو بھی دہرانا ہے۔ اسی پیش نظر انٹیگرل یونیورسٹی میں نو ۹ اگست سے پندرہ اگست تک حب الوطنی اور قومی یکجہتی پر مبنی خصوصی پروگراموں کا انعقاد کیا جارہاہے جنمیں شجر کاری ، مسابقتی مقابلے، ادبی اور دیگر تہذیبی پروگراموں کے ساتھ مختلف نوعیت کی اہم تحریکات بھی شروع کی جائیں گی ۔جنمیں ہر گھر ترنگا گھر گھر ترنگا اور مضافات و دیہات میں شجر کاری کی مہموں کو خاص اہمیت حاصل ہے ۔

    مہنگائی کا ایک جھٹکا، دہلی میں بڑھے PNG کے دام، IGL نے فی یونٹ میں 2.63 روپے کا کیا اضافہ

    آزادی کے 75 سال کے موقع پر خلا میں بھی لہرائے گا ترنگا، ISRO کی جانب سے ہوگی پیش رفت

    اہم بات یہ بھی ہے کہ امرت مہوتسو کے تعلق سے اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی جانب سے موصول ہونے والے احکامات کے احترام اور ان پر عملی اقدامات کے لیے بھی دانشگاہ میں خصوصی بندو بست کئے جارہے ہیں ۔اس موقع پر تقریبات کے دوران ہمیں ہر لمحہ ان لوگوں کو یاد رکھنا ہے جنہوں نے آزادی کی نعمت دلوانے کے لیے ہر طرح کی تکلیفیں برداشت کی تھیں اپنے سینوں پر گولیاں کھائی تھیں ، اور انقلاب زندہ باد کا نعرہ بلند کرتے ہوئے اس دیش کی عزت عظمت اور آزادی کے لئے پھانسی کے پھندوں کو چوم لیا تھا ۔۔۔نہ میرا ہے نہ تیرا ہے یہ ہندوستان سب کا ہے ۔نہیں سمجھی گئی یہ بات تو نقصان سب کا ہے ۔۔۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: