ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سونیا گاندھی کا مودی حکومت پر سخت حملہ، لگایا یہ سنگین الزام

سونیا گاندھی نے کہا کہ مودی حکومت نے اپنے پہلے دور اقتدار سے ہی اپوزیشن پارٹیوں کے رہنماؤں کو اپنا دشمن مانتے ہوئے انہیں نشانے پر لینا شروع کردیا تھا۔۔حکومت کے خلاف آواز اٹھانے کے لئے طلبہ کو نشانہ بنایا گیا اور اس کے غیر جمہوری اقدام کی تنقید کرنے والے نامور دانشوروں کو گرفتار کیا گیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 26, 2020 01:35 PM IST
  • Share this:
سونیا گاندھی کا مودی حکومت پر سخت حملہ، لگایا یہ سنگین الزام
سونیا گاندھی کی فائل فوٹو

نئی دہلی۔ کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پیر کو مودی حکومت پر سخت حملہ کرتے ہوئے جمہوری تنظیموں کا غلط استعمال کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وہ تنظیموں کے ذریعہ مخالفین کی آواز دبانے کا کام کررہی ہے۔ سونیا گاندھی نے آج ایک انگریزی روزنامے میں شائع اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت والی مرکزی حکومت جمہوریت کے ستون پر حملے کر کے انہیں خراب کرنے میں لگی ہے اور جمہوریت کو مضبوط کرنے والی ہر تنظیم کا استعمال اپوزیشن پر حملہ کرنے کےلئے کیا جارہا ہے۔


انہوں نے کہا کہ حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت خطرے میں آگئی ہے۔ ملک کی معیشت شدید بحران میں پھنس گئی ہے اور حکومت اس سے ابھرنے کی کوشش کرنے کے بجائے جمہوری تنظیموں کا غلط استعمال کر کے مخالفین پر حملہ کررہی ہے۔ اظہار رائے کی آزادی چھینی جارہی ہے اور جمہوری نطام کو مضبوط کرنے والی تنظیمون کا غلط استعمال ہو رہا ہے۔ کانگریس صدر نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت نے پورے نظام کو ہی برباد کردیا ہے۔ تفتیشی ایجنسیوں کا استعمال اپوزیشن کو ڈرانے اور دھمکانے کے لئے کیا جارہا ہے۔ حکومت کا نشانہ اپوزیشن کے رہنما ہیں اور مرکزی تفتیشی بیورو اور آئی این اے جیسی تفتیشی ایجنسیاں وزیراعظم اور وزیر داخلہ کے اشارے پر کام کررہی ہیں۔


سونیا گاندھی نے کہا کہ مودی حکومت نے اپنے پہلے دور اقتدار سے ہی اپوزیشن پارٹیوں کے رہنماؤں کو اپنا دشمن مانتے ہوئے انہیں نشانے پر لینا شروع کردیا تھا۔۔حکومت کے خلاف آواز اٹھانے کے لئے طلبہ کو نشانہ بنایا گیا اور اس کے غیر جمہوری اقدام کی تنقید کرنے والے نامور دانشوروں کو گرفتار کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ شہریت ترمیمی بل اور مجوزہ قومی شہریت رجسٹر ۔ سی اے اے اور این آر سی کے خلاف خواتین نے پرامن احتجاج کیا۔ شاہین باغ سے لے کر ملک کے دیگر حصوں میں اس سلسلے میں زبردست تحریک ہوئی لیکن ان کی بات سننے کے بجائے ان پر کھلے عام حملے کئے گئے۔

کانگریس صدر نے کہاکہ مودی حکومت مخالفین کی بات سننے کے بجائے ان پرجابرانہ کارروائی کرتی ہے اور اسی کا نتیجہ ہے کہ اس نے ان احتجاجی مظاہروں کو ملک کے خلاف سازش بتاتے ہوئے 700 سے زیادہ لوگوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرکے کئی لوگوں کو گرفتار کیا۔

انہوں نے کہا کہ ملک نے لاتعداد قربانیوں اور بڑی محنت سے جمہوریت حاصل کی ہے اس لئے آئین میں موجود التزامات پر عمل کرتے ہوئے اس کا تحفظ کیا جانا چاہئے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 26, 2020 01:35 PM IST