உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رمضان المبارک و قرآن پاک کا گہرا تعلق، روز قیامت دونوں ہی بندے کی شفاعت کریں گے

    Youtube Video

    Anwar e Quran: رمضان و قرآن کو اس طور پر بھی مناسبت حاصل ہے کہ یہ دونوں قیامت کے روز بندے کے حق میں سفارش کریں گے۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’قیامت کے دن روزہ اور قرآن دونوں بندے کی شفاعت کریں گے۔

    • Share this:
      قرآن اور رمضان کا بہت گہرا تعلق ہے۔ ماہ رمضان میں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم حضرت جبرئیل ؑکے ساتھ قرآن کا دور فرماتے اور کثرت سے قرآن کی تلاوت کرتے تھے ۔ ہم ماہ رمضان میں دیکھتے ہیں کہ نماز تراویح میں اور الگ سے بھی بہ کثرت قرآن پاک کی تلاوت کی جاتی ہے ۔ رمضان و قرآن کو اس طور پر بھی مناسبت حاصل ہے کہ یہ دونوں قیامت کے روز بندے کے حق میں سفارش کریں گے۔

      نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’قیامت کے دن روزہ اور قرآن دونوں بندے کی شفاعت کریں گے۔ روزہ کہے گا: اے پروردگار! میں نے اس بندے کو دن کے وقت کھانے پینے اور خواہش پوری کرنے سے باز رکھا۔ قرآن پاک کہے گا کہ میں نے اس کو رات کے وقت سونے سے باز رکھا تو آپ میری اس کے لیے شفاعت قبول فرمالیجئے تاہم دونوں بندے کی شفاعت کریں گے اور ان کی شفاعت قبول کی جائے گی۔‘‘(مسند احمد)۔

      Ramazan: رمضان المبارک اﷲ تعالیٰ کی رحمت و بخشش اور مغفرت کا مہینہ، دوسرا عشرہ، آیئے۔ گناہوں کو بخشوانے میں جلدی کریں



      اس میں شک نہیں کہ قرآن پاک کی تلاوت اللہ تعالیٰ کو بیحد محبوب ہے اور اس کو پڑھنا اور سننا دونوں ثواب کا کام ہے ۔ اس کی ایک ایک آیت پر اجر و ثواب کا وعدہ ہے، مگریہ بھی حقیقت ہے کہ قرآن پاک کو سمجھ کر پڑھنا اور اس پر عمل پیرا ہونا نہایت ضروری ہے۔

      ماہ صیام: Ramazan میں نماز تراویح کی ہر چار رکعت کے بعد پڑھی جاتی ہے یہ دعا، تراویح سنت مؤکدہ ہے


      قرآن کریم ایک بڑی برکت والی کتاب ہے جو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ہم نے تمہاری طرف نازل کی ہے تاکہ لوگ اس کی ہر آیات پر غورکریں اس کا مفہوم جانیں اور عقل وفکر رکھنے والے اس سے سبق لیں۔ ''(صٓ29)۔
      نزول قرآن کا مقصد اس کے سوا اورکچھ نہیں کہ انسان اپنے رب کو پہچانے، قرآن میں دی گئی ہدایات اور اس کے بنائے ہوئے اصول و قوانین کے مطابق زندگی بسر کی جائے، جس نے دنیا اور اس کی چیزوں کو پیدا کیا ہے وہی جانتا ہے کہ اس میں کون سی چیز بری ہے اور کون سی چیز اچھی ہے، کس طرح اس کی اصلاح ہوگی اور کن وجوہ سے اس میں فساد وبگاڑ واقع ہوسکتا ہے اس لیے اللہ تعالیٰ ہی دنیا کا نظام مرتب کرسکتا ہے کوئی اورنہیں۔ صرف اسی کی اطاعت سے انسان دونوں جہاں میں فلاح ونجات پاسکتا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: