உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وجے گوئل نے کہا : میرے خلاف بدسلوکی کی کوئی شکایت نہیں ، کیرتی آزاد کا تیکھا حملہ ، یہ کھیل ہیں ، لیڈروں کا اسٹیج نہیں

    ہندوستان کے وزیر کھیل وجے گوئل نے ریو اولمپکس کی آرگنائزنگ کمیٹی کی جانب سے ان کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کرنے کی خبروں کو پوری طرح بے بنیاد اور غلط قرار دیا ہے۔

    ہندوستان کے وزیر کھیل وجے گوئل نے ریو اولمپکس کی آرگنائزنگ کمیٹی کی جانب سے ان کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کرنے کی خبروں کو پوری طرح بے بنیاد اور غلط قرار دیا ہے۔

    ہندوستان کے وزیر کھیل وجے گوئل نے ریو اولمپکس کی آرگنائزنگ کمیٹی کی جانب سے ان کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کرنے کی خبروں کو پوری طرح بے بنیاد اور غلط قرار دیا ہے۔

    • Agencies
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : ہندوستان کے وزیر کھیل وجے گوئل نے ریو اولمپکس کی آرگنائزنگ کمیٹی کی جانب سے ان کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کرنے کی خبروں کو پوری طرح بے بنیاد اور غلط قرار دیا ہے۔ مرکزی وزیر کھیل مسٹر گوئل نے اس رپورٹ کی بابت پوچھے جانے پر نامہ نگاروں سے کہا کہ یہ مکمل طور پر بے بنیاد ہے۔
      ادھر سابق کرکٹر کیرتی آزاد نے وجے گوئل پر بڑا حملہ بولا ہے ۔کیرتی آزاد نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم سابق کھلاڑی ہیں، پھر بھی تمام جگہ نہیں جا سکتے ہیں۔ اگر کسی سے ملنا ہے ، تو چیف دی مشن کے ذریعے سے ہوتا ہے۔ ملنا بھی اندر نہیں باہر ہوتا ہے۔ آپ لیڈر ہیں یا نہیں، آپ اپنے پروٹوکول کے لئے دوسرے کا پروٹوکول نہیں توڑ سکتے ہیں۔
      انہوں نے مزید کہا کہ یہ کھیل ہے، لیڈروں کا اسٹیج نہیں۔ 10 افراد آ گئے۔ کھیل کے پروٹوکول کو توڑ نہیں سکتے۔ ملک کا نام خراب ہوتا ہے۔ کامن ویلتھ گیمز میں بھی آپ اس طرح نہیں جا سکتے۔ لڑائی جھگڑا ہو رہا ہے، شکایت ہوئی۔ بین الاقوامی سطح پر جگ ہنسائی ہو رہی ہے۔ میں 1983 میں لارڈز میں جیتا تھا، اگر کہوں کہ لارڈز میں جائیں گے تو؟
      ہندوستانی ٹیم کے چیف راکیش گپتا نے بھی وزیر کھیل کا پاس منسوخ کرنے کی تنبیہ کی خبروں کی پرزور تردید کی ہے۔ انڈین اسپورٹس اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل انجیٹی سرانیواس نے بھی کہا کہ ایسا کچھ بھی نہیں ہے۔ آپ لوگ کیوں ایک مسئلہ بنانا چاہتے ہیں۔ ایسا کچھ نہیں ہوا ہے اور ہمیں ایسا کوئی خط موصول نہیں ہوا ہے۔
      دراصل یہ معاملہ اس وقت اٹھا جب آرگنائزنگ کمیٹی کی كوٹیننٹل منیجر ساراه پیٹرسن نے ہندوستانی ٹیم کے چیف راکیش گپتا کو لکھے ایک خط میں کہا ہے کہ وزیر کھیل کے ساتھ چل رہے غیر تسلیم شدہ لوگوں نے اگر اپنا جارحانہ اور خراب رویہ بند نہیں کیا تو وزیر کھیل کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کیا جا سکتا ہے۔
      ٹیم کے چیف راکیش گپتا نے ایک بیان جاری کر کےکہا، " ہندوستان۔ جاپان ہاکی مقابلہ ختم ہونے کے بعد وزیر کھیل کو ٹیم میں کھلاڑیوں کو بات چیت کرنے کے لئے مدعو کیا گیا تھا۔ وہ آرگنائزنگ کمیٹی کے والنٹيرس کے ساتھ میدان میں گئے تھے اور کھلاڑیوں سے ملاقات کی تھی لیکن جیسے ہی یہ بات ان کے ذہن میں لائی گئی، وہ میدان سے چلے گئے اور باہر کھلاڑیوں سے ملاقات کی۔
      ٹیم کے چیف مسٹرگپتا نے کہا کہ اس کے بعد سے وزیر کھیل جہاں بھی جا رہے ہیں، وہ خصوصی پاس کے ساتھ جا رہے ہیں۔ یہ بہت بدقسمتی کی بات ہے کہ جہاں کوئی بات نہیں ہے، وہاں ایک مسئلہ کھڑا کیا جا رہا ہے۔ وزیر کھیل مسٹر گوئل یہاں ہندوستانی ٹیم کا حوصلہ بڑھانے آئے ہیں اور ساتھ ہی كھیل گاؤں میں ہندوستانی کھلاڑیوں کی ضروریات کو بھی دیکھ رہے ہیں۔ مسٹر گوئل بدھ کی رات باکسر منوج کمار کے مقابلے کو بھی دیکھنے پہنچے تھے۔
      اس سے پہلے یہ بات سامنے آئی تھی کہ آرگنائزنگ کمیٹی کی جانب سے راکیش گپتا کو ایک خط بھیجا گیا ہے جس میں کھیل کے وزیر کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کرنے کی دھمکی دی گئی ہے۔محترمہ پیٹرسن نے خط میں کہا، "ہمیں ایسی شکایتیں ملی ہیں کہ آپ کے وزیر کھیل کھیل سائٹس میں ان جگہوں پر پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں جہاں صرف تسلیم شدہ افراد ہی جا سکتے ہیں۔ آپ کے وزیر کھیل کے ساتھ ایسے لوگ بھی ہیں جن کے پاس تسلیم شدہ پاس نہیں ہے۔ جب ہمارا عملہ انہیں روکنے کی کوشش کرتا ہے تو وہ جارحانہ ہو جاتے ہیں اور عملے کو دھكے دے کر آگے بڑھ جاتے ہیں۔
      آرگنائزنگ کمیٹی کا کہنا ہے کہ اس طرح کا سلوک تسلیم نہیں کیا جا سکتا ہے۔ گزشتہ تنبیہ کے باوجود ریو اولمپکس کے جمناسٹک کے میدان پر پھر ایسا واقعہ دیکھنے کو ملا۔اگر ہماری ٹیم کو اس طرح کا سلوک آگے بھی نظر آتا ہے تو آپ کےوزیر کھیل کا تسلیم شدہ پاس منسوخ کیا جا سکتا ہے۔ پیٹرسن نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ آپ اس پیغام کو فوری طور پر اپنے وزیرکھیل تک پهچا دیں گے۔
      First published: