உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اگر نہیں ملا کورونا کا نیا ویریئنٹ تو دوسری لہر جیسی خوفناک لہر سے بچ جائے گا ملک : ایکسپرٹس

    اگر نہیں ملا کورونا کا نیا ویریئنٹ تو دوسری لہر جیسی خوفناک لہر سے بچ جائے گا ملک : ایکسپرٹس ۔ تصویر : AP

    اگر نہیں ملا کورونا کا نیا ویریئنٹ تو دوسری لہر جیسی خوفناک لہر سے بچ جائے گا ملک : ایکسپرٹس ۔ تصویر : AP

    کچھ ہی دنوں میں دیوالی سمیت تہواروں کے موسم نزدیک آنے پر خبردار کرتے ہوئے ایکسپرٹس نے کہا کہ انفیکشن کے معاملات کا کم ہونا تصویر کا صرف ایک رخ ہے اور انہوں نے شرح اموات، بڑے پیمانے پر ویکسینیشن اور برطانیہ جیسے ممالک کا حوالہ دیا جہاں کووڈ-19 کے کیسز دوبارہ بڑھ رہے ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی : کئی ایکسپرٹس نے جمعہ کو کہا کہ کورونا وائرس کا کوئی نیا ویریئنٹ نہیں آتا ہے تو ابھی ہندوستان کے کووڈ 19 وبا کی دوسری لہر جیسی خطرناک اور تباہ کن لہر کی زد میں آنے کا اندیشہ نہیں ہے ۔ ایکسپرٹس نے کہا کہ حالانکہ کورونا کے کم تعداد میں معاملات سامنے آنے کا یہ مطلب نہیں ہے کہ وبا اب لوکل ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ کسی مرض کو لوکل تب کہا جاتا ہے جب یہ کسی جغرافیائی خطہ میں مسلسل موجود رہتا ہے ، لیکن اس کے اثر کو کم کیا جاسکتا ہو ۔

      کچھ ہی دنوں میں دیوالی سمیت تہواروں کے موسم نزدیک آنے پر خبردار کرتے ہوئے ایکسپرٹس نے کہا کہ انفیکشن کے معاملات کا کم ہونا تصویر کا صرف ایک رخ ہے اور انہوں نے شرح اموات، بڑے پیمانے پر ویکسینیشن اور برطانیہ جیسے ممالک کا حوالہ دیا جہاں کووڈ-19 کے کیسز دوبارہ بڑھ رہے ہیں۔

      ہندوستان کے کووڈ 10 ٹیکے کی 100 کروڑ ڈوز لگانے کا سنگ میل عبور کرنے کے ایک دن بعد وائرولاجسٹ شاہد جمیل نے کہا کہ ٹیکہ کاری کی شرح میں کافی اضافہ ہوا ہے ، لیکن اس کی رفتار مزید بڑھانے کی ضرورت ہے ۔ ہریانہ کی اشوکا یونیورسٹی کے ویزیٹنگ پروفیسر جمیل نے کہا کہ میں مطمئن نہیں ہوں کہ ہم لوکل صورتحال میں ہیں ۔ حالانکہ ہم اس حصولیابی کا جشن منا رہے ہیں ، لیکن اب بھی کچھ دوری طے کرنی باقی ہے ۔

      انہوں نے اس بات کا بھی تذکرہ کیا کہ ہندوستان میں یومیہ تصدیق ہونے والے انفیکشن کے معاملات گزشتہ تین مہینوں سے دھیمی رفتار سے کم ہورہے ہیں ، جو یومیہ 40000 سے کم ہو کر اب یومیہ 15000 رہ گئے ہیں ۔ مرکزی وزارت صحت کے جمعہ کے اعداد و شمار کے مطابق کورونا کے 15786 نئے معاملات سامنے آنے کے ساتھ لگاتار 28 ویں دن معاملات میں 30 ہزار سے کم کا یومیہ اضافہ ہوا ۔ وہیں 231 اموات کے ساتھ کل مہلوکین کی کل تعداد 453042 تک پہنچ گئی ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ ملک میں اموات کی شرح تقریبا ایک اعشاریہ دو فیصد پر برقرار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پتہ چلتا ہے کہ ہندوستان میں ٹیکہ کووریج کو مزید بڑھانے کی ضرورت ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: