اپنا ضلع منتخب کریں۔

    RSS: آر ایس ایس کی تین روزہ میٹنگ کا آغاز، گجرات میں تنظیم کی توسیع پر توجہ

    Youtube Video

    اس تین روزہ اجلاس کے دوران آر ایس ایس کی بنیاد کی توسیع کے بارے میں ایک تفصیلی منصوبہ تیار کیا جائے گا۔ دیگر موضوعات جن پر بات کی جائے گی ان میں معاشرے میں ہم آہنگی پیدا کرنا اور نامیاتی کاشتکاری کو فروغ دینا شامل ہے۔ جس کے بارے میں ان تین دنوں میں تفصیلی گفتگو کی جائے گی۔

    • Share this:
      راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (RSS) کی فیصلہ ساز تنظیم اکھل بھارتیہ پرتیندھی سبھا (Akhil Bharatiya Pratinidhi Sabha) کا تین روزہ اجلاس جمعہ کے روز گجرات کے احمد آباد کے قریب شروع ہوا۔ پیرانہ گاؤں میں منعقد ہونے والے بند دروازہ پروگرام میں ملک بھر سے تقریباً 1,200 اہم لیڈران اور عہدیداران شرکت کریں گے، جن میں سرسنگھ چالک (آر ایس ایس کے سربراہ) موہن بھاگوت اور سرکاریواہ دتاتریہ ہوسبالے شامل ہیں۔ آر ایس ایس کے ساہ سرکاریواہ (جوائنٹ جنرل سکریٹری) منموہن ویدیا نے میٹنگ کے پہلے دن میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میٹنگ کا ایک اہم مرکز تنظیم کی بنیاد کو بڑھانا ہے۔

      منموہن ویدیا نے کہا کہ آر ایس ایس ملک بھر میں تقریباً 60,000 یومیہ شاخیں چلاتی ہے اور 97.5 فیصد شاخوں نے عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) سے متعلق پابندیوں میں نرمی کے بعد دوبارہ کام کرنا شروع کر دیا ہے۔ ان 60,000 شاکھوں میں شرکت کرنے والے اسکول یا کالج کے طلبا کا 61 فیصد بنتے ہیں۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ آر ایس ایس میں دلچسپی لینے والے نوجوانوں کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ ملک کے کل 2,303 شہروں میں سے 94 فیصد میں شاخیں ہیں۔ یہ ظاہر کرتا ہے کہ ہمارا پھیلاؤ بڑھ رہا ہے۔

      Punjab Election Results 2022: وزیر اعظم مودی نے دیا پنجاب میں مدد کا بھروسہ، تو اروند کیجریوال بولے-Thank You Sir



      آر ایس ایس کے سینئر کارکن نے کہا کہ ملک میں 59,000 منڈل ہیں۔ ہر منڈل میں 10 سے 12 گاؤں شامل ہیں۔ اگلے دو سال میں آر ایس ایس اپنی بنیاد کو بڑھانے کی کوشش کرے گی اور تمام منڈلوں میں شاکھوں کے قیام کے لیے کام کرے گی۔ اس سمت میں ہمارا کام کورونا وائرس کی وجہ سے رک گیا۔ اب ہم اسے اگلے دو سال کے دوران حاصل کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔

      Assembly Elections Result 2022: بہتر انتظامیہ، امن و امان کا قیام اور خواتین کا تحفظ یوپی عوام کی بنی پہلی ترجیح



      ویدیا کے مطابق شاکھوں کے ذریعے آر ایس ایس میں شامل ہونے والوں کے علاوہ لوگوں کی ایک بڑی تعداد تنظیم کی ویب سائٹ پر چلائی جا رہی ’آر ایس ایس میں شامل ہوں‘ (Join RSS) مہم کے ذریعے اس کا حصہ بننے میں اپنی دلچسپی ظاہر کر رہی ہے۔ یہ تعداد 2017 اور 2021 کے درمیان زیادہ سے زیادہ بڑھ رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہر سال 1 لاکھ سے 1.25 لاکھ افراد نے آر ایس ایس میں شامل ہونے کی خواہش ظاہر کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ مالوا (وسطی ہندوستان) اور مغربی بنگال کے لوگوں نے 2021 میں دیگر خطوں کے مقابلے میں زیادہ درخواستیں بھیجی ہیں۔

      اس تین روزہ اجلاس کے دوران آر ایس ایس کی بنیاد کی توسیع کے بارے میں ایک تفصیلی منصوبہ تیار کیا جائے گا۔ دیگر موضوعات جن پر بات کی جائے گی ان میں معاشرے میں ہم آہنگی پیدا کرنا اور نامیاتی کاشتکاری کو فروغ دینا شامل ہے۔ جس کے بارے میں ان تین دنوں میں تفصیلی گفتگو کی جائے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: