ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بیدار ہونے کا وقت! پانی کے بحران کی ابتدائی علامتیں خطرے کی گھنٹی

ساختیاتی عدم استحکام کی وجہ سے پانی کا آنے والا بحران کسی چھوٹے حصے میں نہیں ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہاں تک کہ وافر مقدار میں پانی کی فراہمی والے علاقوں کے باشندوں کو بھی پانی تک رسائی حاصل کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

  • Share this:
بیدار ہونے کا وقت! پانی کے بحران کی ابتدائی علامتیں خطرے کی گھنٹی
بیدار ہونے کا وقت! پانی کے بحران کی ابتدائی علامتیں خطرے کی گھنٹی

اگرچہ پانی کے بحران کے وجود کو واضح کرنے کے لئے بہت سارے حقائق اور اعداد و شمار موجود ہیں ، لیکن یہ ایک ایسی صورتحال ہے جو متعدد ماحولیاتی اور تہذیبی علامتوں سے پہلے ہے۔ برسوں سے ہم نے ان پیشرفتوں کا مشاہدہ کیا ، بعض اوقات قدرتی آفات کے بھیس میں یا موسمی اتار چڑھاو کے طور پر ۔ لیکن یہ بات ناقابل تردید ہے کہ وہ سب پانی کے وسائل کو ختم کرنے کی ایک بڑی داستان کے حصے ہیں جن سے خطرے کی گھنٹی بجتی ہے۔


ساختیاتی عدم استحکام کی وجہ سے پانی کا آنے والا بحران کسی چھوٹے حصے میں نہیں ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہاں تک کہ وافر مقدار میں پانی کی فراہمی والے علاقوں کے باشندوں کو بھی پانی تک رسائی حاصل کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ پانی کی سپلائی کے بندوبست میں پہل اور سرمایہ کاری کی کمی بھی اس کی ایک وجہ ہے۔


آب و ہوا کے خطرات اور پانی کے عدم تحفظ کا امتزاج ہندوستان کی آبادی کے ایک بہت بڑے حصے کو غربت میں پھنسے رکھنے کا سب سے بڑا عنصر رہا ہے۔ انہیں پانی کی تلاش اور اسے جمع کرنے کے لئے اپنے دن کے بڑے حصے کو وقف کرنے کے لئے معاشی پیداواریت کی قربانی دینا ہوگی۔ یہاں تک کہ ایک بار جب انھیں یہ پانی مل جاتا ہے تو اس کا خراب معیار بیماریوں اور نقص تغذیہ کے واقعات کا باعث بنتا ہے۔


اب وقت آگیا ہے کہ ہندوستان کے عوام اور پالیسی ساز ان انتباہی علامات کو پہچانیں اور ہماری آبی تحفظ اور صفائی ستھرائی کی کوششوں کو انتہائی غیر محفوظ کمیونٹیز کی طرف موڑیں۔ ان علامات کی نشاندہی کرنا پانی کے بحران کو حل کرنے اور اس سے متاثرہ افراد کی زندگیوں کو بچانے کے لئے ایک فائدہ مند پہلا قدم ہوگا۔

مشن پانی ، سی این این۔ نیوز 18 اور ہارپک انڈیا کی پہل ہے جو پانی کی قلت اور صفائی ستھرائی کے مسئلے کو حل کرنے کے لئے کام کر رہا ہے ، تاکہ ہر ہندوستانی شہری کو دونوں تک یکساں رسائی حاصل ہو۔ اس تاریخی تبدیلی کا حصہ بنیں ، اور پانی کی بچت اور حفظان صحت کو فروغ دینے کے لئے ایک جل پریگیہ لیں۔ www.news18.com/mission-pani ملاحظہ کریں۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jan 21, 2021 10:13 PM IST