உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Triple Talaq: ’تین طلاق صرف مسلم خواتین کیلئے فائدہ مند نہیں، مردوں کے لیے بھی مثبت‘وزیر اعظم نریندر مودی

    مرکز نے لڑکیوں کی شادی کے قابل کم از کم عمر 18 سے بڑھا کر 21 سال کرنے کی تجویز پیش کی ہے، چاہے وہ کسی بھی مذہب کا ہو۔ پی ایم مودی نے پہلے کہا تھا کہ لڑکیوں کے لیے شادی کی عمر بڑھانے کا مقصد ’دیش کی بیٹی‘ (desh ki beti) کو بااختیار بنانا ہے۔

    مرکز نے لڑکیوں کی شادی کے قابل کم از کم عمر 18 سے بڑھا کر 21 سال کرنے کی تجویز پیش کی ہے، چاہے وہ کسی بھی مذہب کا ہو۔ پی ایم مودی نے پہلے کہا تھا کہ لڑکیوں کے لیے شادی کی عمر بڑھانے کا مقصد ’دیش کی بیٹی‘ (desh ki beti) کو بااختیار بنانا ہے۔

    مرکز نے لڑکیوں کی شادی کے قابل کم از کم عمر 18 سے بڑھا کر 21 سال کرنے کی تجویز پیش کی ہے، چاہے وہ کسی بھی مذہب کا ہو۔ پی ایم مودی نے پہلے کہا تھا کہ لڑکیوں کے لیے شادی کی عمر بڑھانے کا مقصد ’دیش کی بیٹی‘ (desh ki beti) کو بااختیار بنانا ہے۔

    • Share this:
      وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) نے منگل کو راجیہ سبھا میں اپنی تقریر کے دوران بتایا کہ تین طلاق (Triple Talaq) پر پابندی سے نہ صرف مسلم بیٹیوں کو بلکہ مردوں کو بھی فائدہ پہنچا ہے۔ انہوں نے صنفی مساوات کی ضمانت دی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج مرد اور عورت برابر ہیں۔ مردوں اور عورتوں کی شادی کی عمر میں فرق کی کوئی وجہ نہیں ہے۔

      مرکز نے لڑکیوں کی شادی کے قابل کم از کم عمر 18 سے بڑھا کر 21 سال کرنے کی تجویز پیش کی ہے، چاہے وہ کسی بھی مذہب کا ہو۔ پی ایم مودی نے پہلے کہا تھا کہ لڑکیوں کے لیے شادی کی عمر بڑھانے کا مقصد ’دیش کی بیٹی‘ (desh ki beti) کو بااختیار بنانا ہے تاکہ انہیں تعلیم مکمل کرنے اور اپنا کیریئر بنانے اور ’آتما نیربھار‘ (Aatmanirbhar) بننے کے لیے کافی وقت ملے۔

      حال ہی میں اتحاد ملت کونسل کے سربراہ مولانا توقیر رضا خان کی بہو ندا خان نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) میں شمولیت اختیار کی تھی۔ ندا تین طلاق کا شکار تھی۔ انھوں نے کہا کہ تین طلاق کے خلاف بی جے پی کی لڑائی پارٹی کی حمایت کے لیے اہم موڑ پر ہے۔ بی جے پی حکومت نے تین طلاق پر قانون بنا کر خواتین کو جو تحفظ دیا ہے۔ یہ اس بار انتخابات میں بڑا مسئلہ ہوگا۔

      پی ایم مودی نے پارلیمنٹ میں مزید کہا کہ جموں و کشمیر میں دفعہ 370 کے خاتمے سے خواتین کو بااختیار بنایا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت نے آرٹیکل 370 کو منسوخ کرکے لوگوں کو بھی بااختیار بنایا ہے۔ راجیہ سبھا میں پی ایم مودی نے صنفی تفاوت کے اہم مسئلہ پر بھی خطاب کیا۔

      وزیراعظم نے کہا کہ مرد اور خواتین کی شادی کی عمر میں فرق کی کوئی وجہ نہیں ہے۔ پی ایم مودی نے یہ بھی کہا کہ تین طلاق کے خاتمے سے نہ صرف بیٹیوں بلکہ پورے معاشرے کو فائدہ پہنچا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: