ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ٹی آر پی تنازعہ کے بعد 12 ہفتوں کے لئے روکی جائے گی نیوز چینلوں کی ہفتہ واری ریٹنگ، BARC کا فیصلہ

فرضی ٹیلی ویژن ریٹنگ پوائنٹ تنازعہ کے بعد سبھی نیوز چینلوں کی ہفتہ واری ریٹنگ اگلے 8-12 ہفتے کے لئے روکی جا رہی ہے۔ براڈ کاسٹ آڈینس ریسرچ کونسل نے یہ تجویز پیش کی ہے۔ ریٹنگ ایجنسی نے کہا کہ وہ فرضی ریٹنگ کی خبروں اور دعووں کے بیچ اپنے سسٹم کا جائزہ لے گی۔

  • Share this:
ٹی آر پی تنازعہ کے بعد 12 ہفتوں کے لئے روکی جائے گی نیوز چینلوں کی ہفتہ واری ریٹنگ، BARC کا فیصلہ
علامتی تصویر

نئی دہلی۔ فرضی ٹیلی ویژن ریٹنگ پوائنٹ (TRP) تنازعہ کے بعد سبھی نیوز چینلوں کی ہفتہ واری ریٹنگ اگلے 8-12 ہفتے کے لئے روکی جا رہی ہے۔ براڈ کاسٹ آڈینس ریسرچ کونسل (BARC) نے یہ تجویز پیش کی ہے۔ ریٹنگ ایجنسی نے کہا کہ وہ فرضی ریٹنگ کی خبروں اور دعووں کے بیچ اپنے سسٹم کا جائزہ لے گی۔  BARC نے کہا کہ ' نیوز جانر' کے ساتھ ہی  BARC سبھی نیوز چینلوں کے لئے انفرادی ہفتہ واری ریٹنگ جاری کرنا بند کر دے گی۔


BARC ٹیک کام کی دیکھ ریکھ میں ویلڈیشن اور ٹرائل کو لے کر اس میں تقریبا 8-12 ہفتے لگنے کی امید ہے۔  BARC نے کہا '  BARC ریاست اور زبان کے تحت ناظرین کے نیوز جانر کا ویکلی اسٹیمیٹ دیتی رہے گی'۔


خیال رہے کہ مبینہ فرضی ٹی آر پی گھوٹالہ اس وقت روشنی میں آیا جب ریٹنگ ایجنسی براڈ کاسٹ آڈینس ریسرچ کونسل نے ' ہنسا ریسرچ گروپ' کے ذریعہ شکایت درج کرا کر الزام لگایا کہ کچھ ٹی وی چینل ٹی آر پی کی تعداد میں پیرا پھیری کر رہے ہیں۔


بتا دیں کہ ممبئی پولیس نے دعویٰ کیا تھا کہ ری پبلک ٹی وی اور دو مراٹھی چینلوں نے ٹی آر پی میں ہیرا پھیری کی ہے۔ پولیس نے بتایا کہ مبینہ ٹی آر پی اسکیم کے سلسلہ میں اب تک چار لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ان میں دو مراٹھی چینلوں کے مالک شامل ہیں۔ ری پبلک ٹی وی کے چیف فائنانشیل آفیسر شیو سبرامنیم سندرم اور سنگھ اس سے پہلے پولیس کے سامنے پیش ہونے سے یہ کہتے ہوئے انکار کر چکے تھے کہ ٹی وی چینل نے راحت کے لئے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا جس پر عدالت نے ری پبلک میڈیا گروپ سے ٹی آر پی گھوٹالہ معاملہ میں جاری سمن کے خلاف بمبئی ہائی کورٹ کے پاس جانے کو کہا۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 15, 2020 02:19 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading