ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اترکھنڈ حکومت کی جانب سے کمبھ میلہ کو کیا جاسکتا ہے ختم! کووڈ۔19 کے کیسوں میں لگاتار اضافہ

یکم اپریل کو کمبھ میلہ شروع ہوا تھا اور اس ماہ کے آخر میں اختتام پذیر ہوگا۔ نرنجانی اکھاڑہ کے اعلان کے باوجود اتراکھنڈ کے کابینہ کے وزیر بنیشھر بھگت نے کہا کہ یہ کنبھ جاری رہے گا۔

  • Share this:
اترکھنڈ حکومت کی جانب سے کمبھ میلہ کو کیا جاسکتا ہے ختم! کووڈ۔19 کے کیسوں میں لگاتار اضافہ
یکم اپریل کو کمبھ میلہ شروع ہوا تھا اور اس ماہ کے آخر میں اختتام پذیر ہوگا۔ نرنجانی اکھاڑہ کے اعلان کے باوجود اتراکھنڈ کے کابینہ کے وزیر بنیشھر بھگت نے کہا کہ یہ کنبھ جاری رہے گا۔

ذرائع نے نیوز 18 کو بتایا کہ اگر یہاں کی سب سے بڑی تنظیم اکھاڈا پریشد (Akhada Parishad) کی طرف سے کوئی تجویز آجائے تو اتراکھنڈ کی حکومت کمبھ میلہ کو کالعدم قرار دے سکتی ہے۔ ادھر ترت سنگھ راوت (Singh Rawat) کی زیرقیادت حکومت نے پوری ریاست میں جمعرات کی رات سے نائٹ کرفیو (night curfew) نافذ کردیا ہے اور وزیراعلی ہفتے کے آخر میں کرفیو اور رات کے سخت کرفیو پر عمل کرنے کے لئے جمعہ کی شام کووڈ 19 کی صورتحال کا جائزہ لیں گے۔ نرنجانی اکھاڑا (Niranjani Akhara) کے علاوہ آنند اکھاڑہ (Anand Akhara) بھی ہفتہ سے کمبھ کے اختتام کے لئے شریک ہوئے ہیں۔


جمعرات کے روز جیسے ہی ہری دوار میں روزانہ 600 سے زیادہ نئے کورونا وائرس کے کیسوں کی اطلاع ملی ہے۔ نرنجانی اکھاڑہ (Niranjani Akhara) نے کمبھ میلے میں شرکت کرنے والے ایک نمایاں اکھارس (سنیاسی گروہ) نے اپنے پیروکاروں کو ہفتہ کو مذہبی اجتماع سے واپس چلے جانے کے لیے کہا ہے۔


یکم اپریل کو کمبھ میلہ شروع ہوا تھا اور اس ماہ کے آخر میں اختتام پذیر ہوگا۔ نرنجانی اکھاڑہ کے اعلان کے باوجود اتراکھنڈ کے کابینہ کے وزیر بنیشھر بھگت نے کہا کہ یہ کنبھ جاری رہے گا۔


دوسری طرف دیکھا جائے تو مرکزی وزارت ثقافت (Ministry of Culture) ملک میں کورونا وائرس (Covid-19) کے معاملوں میں اضافے کی وجہ سے ہندوستان کے محکم آثار قدیمہ  (Archaeological Survey of India (ASI)) کے تحت آنے والے تمام اہم تاریخی عمارتوں، میوزیموں اور خصوصی مقامات کو 15 مئی تک فوری طور پر بند کردیا گیا ہے ۔

اس سلسلے میں ایک حکم اے ایس آئی نے جاری کیا اور اسے وزیر ثقافت پرہلاد پٹیل (Prahlad Patel) نے ٹویٹ بھی کیا تھا۔اے ایس آئی کے ذرائع کے مطابق ’’کووڈ۔19 کی موجودہ صورتحال کی وجہ سے تمام تاریخی مقامات اور عجائب گھروں کو فوری طور پر 15 مئی تک یا اگلے احکامات تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ان میں 3,693 تاریخی مقامات اور 50 میوزیم شامل ہیں‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 16, 2021 03:05 PM IST