உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بی جے پی نے کہا "راجیہ سبھا میں ہنگامہ کانگریس اورترنمول کی سازش کا حصہ"۔

    بی جے پی کےسینئرلیڈر اور مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر نےکہا کہ پورا ملک کورونا سے لڑرہا ہے اور وزیراعظم مودی کے ساتھ کھڑا ہے۔

    پرکاش جاوڈیکرنے کہا کہ آسام میں این آرسی کے معاملہ پرراجیہ سبھا میں ہوئی بحث کے دوران ترنمول اور کانگریس کے اراکین کی ہنگامہ آرائی پرسوال اٹھایا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کانگریس اور ترنمول کانگریس پر آسام میں بنگلہ دیشی دراندازوں کو بچانے کا الزام لگاتے ہوئے بدھ کو کہاکہ ان پارٹیوں کے اراکین نے سازش کے تحت راجیہ سبھا کی کارروائی نہیں چلنے دی۔

      پارٹی نے سوال کیا کہ آسام میں قومی شہریت رجسٹر (این آر سی ) بننے سے ان جماعتوں کا کیا خوف ہے اور کہاکہ ترقی پسند اتحاد کی لیڈر سونیا گاندھی اس معاملہ پر اپنا موقف واضح کریں۔
      بی جے پی کے سینئر لیڈر پرکاش جاوڈیکر نے یہاں پریس کانفرنس میں کہاکہ آسام میں این آر سی کے معاملہ پر راجیہ سبھا میں ہوئی بحث کے دوران ترنمول کے اراکین نے اسپیکر کی کرسی کے نزدیک آکر نعرے بازی کی اور کانگریس کے اراکین نے بھی ان کے ساتھ شوروغل کیا۔ ان کا مقصد ایک سازش کے تحت ایوان میں شوروغل کرنا تھا، جس سے بی جے پی کے صدرامت شاہ اپنی بات نہ رکھ سکیں اور وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ بحث کا جواب نہ دے سکیں۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین ایم وینکیا نائیڈو نے بھی کہا تھا کہ اپوزیشن اراکین سازش کے تحت ایسا کررہے ہیں۔
      پرکاش جاوڈیکر نے اپوزیشن اراکین رویہ کو جمہوریت کا قتل قرار دیتے ہوئے کہاکہ بی جے پی اس کی مذمت کرتی ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کانگریس اورترنمول کانگریس یہ بتائیں کہ انہیں کیا خوف ہے وہ بحث سے کیوں بھاگ رہے ہیں کیا وہ دراندازوں کو بچانا چاہتے ہیں۔
      First published: