ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اقلیتی امور کی مرکزی وزارت چلائے گی کورونا ویکسین کو لے کر بیداری مہم

مختار عباس نقوی نے کہا کہ کچھ مفاد پرست لوگوں نے ملک کے کچھ علاقوں میں کورونا ویکسین کے حوالے سے افواہوں اور خدشات کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔ جو لوگ اس طرح کے وہم پیدا کرتے ہیں وہ لوگوں کی صحت اور سلامتی کے دشمن ہیں ۔

  • Share this:
اقلیتی امور کی مرکزی وزارت چلائے گی کورونا ویکسین کو لے کر بیداری مہم
اقلیتی امور کی مرکزی وزارت چلائے گی کورونا ویکسین کو لے کر بیداری مہم

نئی دہلی : مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے ویکسنیشن مہم کو لے کر دہلی میں بتایا کہ مہم کی آغاز رام پور اترپردیش سے ہوگی اور وزارت اقلیتی امور ، مختلف سماجی ، تعلیمی اداروں ، سیلف ہیلپ گروپوں ، خواتین کے گروپوں کے ساتھ مل کر دیہی اور دور دراز علاقوں میں کورونا ویکسینیشن کے بارے میں بیداری پیدا کرنے کے لئے ، " جان ہے تو جہاں ہے " مہم کا آغاز کررہی ہے ۔ اس مہم میں مختلف مذہبی ، معاشرتی ، ثقافتی ، تعلیمی ، طبی اور سائنس اور دیگر شعبوں ، اسٹریٹ ڈراموں وغیرہ سے تعلق رکھنے والے ممتاز افراد کے پیغامات کے ذریعے مثبت پیغام دیا جائے گا ۔ نقوی نے کہا کہ 21 جون 2021 کو اقلیتی ارتکاز کے ضلع رام پور (یوپی) سے شروع ہونے والی "جان ہے تو جان ہے" مہم ملک کے مختلف مقامات پر ہوگی۔


مختار عباس نقوی نے کہا کہ کچھ مفاد پرست لوگوں نے ملک کے کچھ علاقوں میں کورونا ویکسین کے حوالے سے افواہوں اور خدشات کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔ جو لوگ اس طرح کے وہم پیدا کرتے ہیں وہ لوگوں کی صحت اور سلامتی کے دشمن ہیں ۔ نقوی نے کہا کہ ملک کے سائنسدانوں کی محنت کے نتیجے میں دو "میڈ اِن انڈیا" کورونا ویکسین تیار کی گئیں ہیں ، سائنسی طور پر یہ ثابت ہوا ہے کہ یہ ویکسین مکمل طور پر محفوظ ہیں اور کورونا انفیکشن کی روک تھام کے لئے اہم ہتھیار ہیں۔


انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں دنیا کے سب سے بڑے کورونا ویکسینیشن کے بارے میں پائے جانے والے خدشات اور افواہوں کو دور کرنے کے لئے "جان ہے تو جہاں ہے" مہم میں ریاست کی حج کمیٹیوں ، وقف بورڈ ، وقف سے وابستہ تعلیمی اداروں ، کونسلوں ، مولانا آزاد فاﺅنڈیشن اور وزارت برائے اقلیتی امور کی "نئی روشی" اسکیم کے تحت کام کرنے والی سماجی تنظیموں ، خواتین سیلف ہیلپ گروپس اور سیلف ہیلپ گروپس کو شامل کرنے کا منصوبہ ہے ۔


"جان ہے تو جہاں ہے" مہم میں دہلی جامع مسجد سید احمد بخاری کے شاہی امام؛ ڈاکٹر مفتی مکرم احمد ، فتح پوری مسجد ، دہلی کے امام، جین مذہبی استاد آچاریہ لوکیش مونی، مسٹر منجندر سنگھ سرسا ، صدر ، دہلی سکھ گوردوارہ انتظامیہ کمیٹی، سید زین العابدین ،گدین نشین اجمیر شریف درگاہ، انجمن سید جدگان ، صدر درگاہ شریف ، اجمیر حاجی سید معین حسین ، خادم درگاہ اجمیر شریف جنب غلام ا کبریہ دستگیر، سید نصرالدین چشتی ، آل انڈیا صوفی سجادنشین کونسل کے چیئرمین، سید حماد نظامی ، درگاہ نظام الدین دہلی ، شیعہ مسجد دہلی کے شاہی امام مولانا محمد علی محسن تقوی ،ڈاکٹر خواجہ افتخار احمد ، بانی ، بین عقید ہم آہنگی فاونڈیشن آف انڈیا، ڈاکٹر طارق منصور ، وائس چانسلر علی گڑھ مسلم یونیورسٹی، ڈاکٹر عمیر احمد الیاسی ، آل انڈیا امام تنظیم کے چیف امام، معروف نیورو سرجن ڈاکٹر مزدا ٹوریل، ڈائریکٹر ، یونیسکو پرزور اور جیو پارسی ڈاکٹر شیرناز کاما۔ مختلف عیسائی اور بودھ مذہبی گرو ، فلم ٹیلی و ٹیلی ویزن کے شعبے سے وابستہ شخصیات وغیرہ لوگوں میں ویکسینیشن کے بارے میں بیداری پیداکریں گے ۔

مختار عباس نقوی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت ہندوستان میں دنیا کی سب سے بڑی کورونا ویکسینیشن مہم چلا رہی ہے ، جس میں اب تک کروڑوں افراد کو کورونا ٹیکے لگائے جاچکے ہیں۔ دنیا کے بیشتر ترقی یافتہ ممالک کے مقابلے میں ہندوستان پہلے ہی کورونا ویکسینیشن مہم میں بہت آگے ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 19, 2021 06:54 PM IST