உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لاک ڈاؤن کے بیچ علی گڑھ میں ہوئی انوکھی شادی، سماجی دوری کے ساتھ دولہا۔ دلہن نے لئے سات پھیرے

    علی گڑھ میں لاک ڈاون کے درمیان ہوئی شادی

    علی گڑھ میں لاک ڈاون کے درمیان ہوئی شادی

    شادی ختم ہونے کے بعد دلہن کی رخصتی کی رسم بھی کرائی گئی۔ رخصتی میں لڑکی کی طرف سے صرف 2 افراد شریک ہوئے۔

    • Share this:
      علی گڑھ ۔ لاک ڈاؤن کے درمیان علی گڑھ کے آریہ سماج مندر میں بڑی سادگی کے ساتھ شادی کی ایک تقریب ہوئی۔ شادی کی تقریب کے پورے پروگرام میں دولہا صرف 2 باراتی لے کر پہنچا۔ لڑکی کی طرف سے بھی صرف 2 افراد ہی موجود تھے۔ اس دوران ، دولہے نے لاک ڈاؤن پر عمل کرتے ہوئے چہرے پر ماسک پہن کر اور ہاتھوں کو سینیٹائز کرنے کے بعد پورے رسم کے ساتھ منڈپ میں دلہن کے سات پھیرے لئے۔ اگنی کو گواہ مانتے ہوئے دلہے نے دلہن کے ساتھ سات پھیرے لینے کے بعد شادی میں موجود صرف 3 افراد کا آشیرواد لیا۔

      شادی ختم ہونے کے بعد دلہن کی رخصتی کی رسم بھی کرائی گئی۔ رخصتی میں لڑکی کی طرف سے صرف 2 افراد شریک ہوئے۔ اس شادی کے بارے میں  دونوں کنبوں کا کہنا ہے کہ وہ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد باقاعدہ طور پر پروگرام کا اہتمام کریں گے۔

      علی گڑھ کے ساسنی گیٹ کے باشندہ انکت وششٹھ ولد آنجہانی برجیش چندر شرما کی شادی بہاری نگر کے رہائشی نیترپال شرما کی بیٹی موہنی کے ساتھ طئے ہوئی تھی۔ شادی کی تمام تیاریوں کو مکمل کرنے کے لئے لوگ مصروف عمل تھے ، تبھی پی ایم مودی نے کورونا وبا سے متعلق لاک ڈاؤن کا حکم دے دیا۔ پورا ملک لاک ڈاؤن ہو گیا ، شادی کے پروگراموں پر پابندی عائد کر دی گئی۔ یہاں دونوں خاندانوں نے کارڈ بھی تقسیم کر دئیے تھے اور شادی کے پروگرام کے لئے کالاوتی گیسٹ ہاؤس بک کر لیا گیا تھا۔ لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے شادی کی تقریب کے تمام انتظامات تعطل کا شکار ہو گئے۔

      انکت کے بہنوئی گورو نے کہا کہ شادی کے اگلے دو سال تک کوئی مہورت نہیں تھا اس لئے اچل روڈ واقع آریہ سماج مندر میں شادی کرنے پر غور وفکر کیا گیا۔ دونوں کنبوں کے درمیان اتفاق رائے ہونے کے بعد اس شادی کو انجام تک پہنچایا گیا۔
      Published by:Nadeem Ahmad
      First published: