உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

     لکھیم پور کھیری کیس: پوسٹ مارٹ میں بڑا انکشاف، ریپ کے بعد گلا دبا کر کیا گیا تھا دونوں بہنوں کا قتل

     lakhimpur kheri double murder: ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ریپ کے بعد دونوں بہنوں کو گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں گلا دبانے اور پھانسی کی تصدیق ہوئی ہے۔

    lakhimpur kheri double murder: ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ریپ کے بعد دونوں بہنوں کو گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں گلا دبانے اور پھانسی کی تصدیق ہوئی ہے۔

    lakhimpur kheri double murder: ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ریپ کے بعد دونوں بہنوں کو گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں گلا دبانے اور پھانسی کی تصدیق ہوئی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Lakhimpur, India
    • Share this:
      لکھیم پور کھیری ضلع کے نگاسن کوتوالی علاقے میں دو دلت بہنوں کے ریپ بعد قتل کے معاملے میں پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آئی ہے۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بڑا انکشاف ہوا ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ریپ کے بعد دونوں بہنوں کو گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں گلا دبانے اور پھانسی کی تصدیق ہوئی ہے۔

      پوسٹ مارٹم کے بعد دونوں بہنوں کی لاشیں نگراسن کوتوالی کے تمولی پوروا گاؤں پہنچیں۔ لاش پہنچتے ہی اہل خانہ میں کہرام مچ گیا۔ گھر والوں کی رو رو کر حالت خراب ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق پولیس کی حفاظت میں دونوں لاشوں کی آخری رسومات کی تیاریاں بھی شروع کر دی گئی ہیں۔

       
      انتہائی شرمناک: اسکول بس میں 3 سال کی بچی کا ریپ! ڈرائیور اور خاتون ہیلپر دونوں گرفتار

      تعلیمی اداروں کے مسائل، حکومت کی حکمتِ عملی اور ماہرین تعلیم کے نظریات 

      ایس پی ترجمان نے اہل خانہ سے کی ملاقات
      دوسری جانب لکھیم پور کھیری میں دو سگی بہنوں کے قتل کے معاملے پر بھی سیاست شروع ہوگئی ہے۔ سماج وادی پارٹی کی ترجمان جوہی سنگھ جمعرات کو دونوں متوفی بہنوں کے گھر پہنچیں اور کہا کہ متاثرہ خاندان کو انصاف ملنا چاہیے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ متوفی بیٹیوں کی ماں اور رشتہ داروں کے ساتھ تھانے میں مار پیٹ کی گئی انہیں مکمل انصاف ملنا چاہیے۔ سماج وادی پارٹی متاثرہ خاندان کے ساتھ کھڑی ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: