ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ کی تیزاب متاثرہ شیوانی کو دو سال کی قانونی لڑائی کے بعد ملا انصاف

میرٹھ کی رہنے والی تیزاب متاثرہ شیوانی کو دو سال کی قانونی لڑائی کے بعد آج انصاف ملا ہے۔ دراصل 2018 میں ایک اسکول کے منیجر نے شيوانی پر تیزاب ڈلوا کر شیواني کے چہرے کے ساتھ اُس کی زندگی بھی برباد کر دی تھی لیکن شیوانی کے گھر اور سسرال والوں نے شیوانی کا ساتھ نہیں چھوڑا۔

  • Share this:

میرٹھ کی رہنے والی تیزاب متاثرہ شیوانی کو دو سال کی قانونی لڑائی کے بعد آج انصاف ملا ہے۔ دراصل 2018 میں ایک اسکول کے منیجر نے شيوانی پر تیزاب ڈلوا کر شیواني کے چہرے کے ساتھ اُس کی زندگی بھی برباد کر دی تھی لیکن شیوانی کے گھر اور سسرال والوں نے شیوانی کا ساتھ نہیں چھوڑا اور آج اسی ساتھ اور ظلم کے خلاف لڑنے کے جذبے کی وجہ سے شیوانی کو انصاف ملا ہے اور 6 مجرموں کو ضلع کورٹ نے عمر قید کی سزا سنائی ہے۔

اے ڈی جی سی کریمنل مکیش متل کے مطابق تیزاب کیس کے معاملے میں یہ پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ مجرموں کو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہو اس سے پہلے لکشمی اگروال کیس میں بھی محض دس سال کی سزا دی گئی تھی۔ مکیش کے مطابق شیوانی تیزاب کیس میں سبھی چھ ملزمین کو اسپیشل کریمنل کورٹ نے قصوروار قرار دیتے ہوئے سخت سزا دیکر نظیر پیش کی ہے۔


اس معاملے میں سات گواہوں کے علاوہ فارینسک رپورٹ اور پولیس جانچ نے مجرموں کو سلاخوں کے پیچھے پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا۔ اس معاملے میں اہم ملزم عجب سنگھ کے علاوہ واردات میں شامل دِیگر پانچ افراد جن میں تیزاب بیچنے والا شخص بھی شامل ہے کو بھی کورٹ نے برابر کا جرم میں شریک مانتے ہوئے سخت سزا دی ہے ۔ وہیں متاثرہ شوانی اور ان کے اہل خانہ نے کورٹ کے اس فیصلے پر خوشی ظاہر کرتے ہوئے اس فیصلے کو ایک نظیر قرار دیا ہے۔

Published by: Sana Naeem
First published: Jan 15, 2021 12:54 PM IST