ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

یو پی: ایم آئی ایم نے یونیورسٹی طلبا یونین کے انتخابات لڑنے کی تیاری کی

مجلس اتحاد المسلمین نے خو دکو نوجوانوں سے جوڑنے کے لئے ریاست گیر پیمانے پر’’ ایم آئی ایم یوتھ ونگ‘‘ کی تشکیل دی ہے ۔

  • Share this:
یو پی: ایم آئی ایم نے یونیورسٹی طلبا یونین کے انتخابات لڑنے کی تیاری کی
مجلس اتحاد المسلمین نے خو دکو نوجوانوں سے جوڑنے کے لئے ریاست گیر پیمانے پر’’ ایم آئی ایم یوتھ ونگ‘‘ کی تشکیل دی ہے ۔

الہ آباد ۔ بہار کے چناؤ میں غیر معمولی کامیابی کے بعد مجلس اتحاد المسلمین اب یو پی کی طلبہ سیاست میں اپنا قدم رکھنے جا رہی ہے۔ مجلس اتحاد المسلمین نے خو دکو نوجوانوں سے جوڑنے کے لئے ریاست گیر پیمانے پر’’ ایم آئی ایم یوتھ ونگ‘‘ کی تشکیل دی ہے ۔ یوتھ ونگ کا قیام عمل میں آتے ہی ایم آئی ایم نے الہ آباد سینٹرل یونیورسٹی سمیت ریاست کی دیگر یونیورسٹیوں کے طلبہ یونین کا چناؤ لڑنے کا بھی اعلان کر دیا ہے ۔ یو پی میں مسلم آبادی کا تناسب بیس فیصد سے زیادہ بتایا جا تا ہے ۔ ریاست میں مسلمانوں کی آبادی کے بڑے تناسب کو دیکھتے ہوئے مجلس اتحاد المسلمین نے ابھی سے اسمبلی چناؤ لڑنے کی تیاریاں شروع کر دی ہیں ۔پارٹی نے مسلم نوجوانوں کو جوڑنے کے لئے اندرون شہر عوامی جلسوں کی شروعات کر دی ہے ۔

یو پی میں ایم آئی ایم نے اپنا سیاسی ہدف مسلم نوجوانوں اور طلبہ کو بنایا ہے ۔ ریاست کے مسلم نو جوانوں اور طلبہ میں اپنی پیٹھ بنانے کے لئے ایم آئی ایم نے اپنی یوتھ ونگ کے قیام کا با ضابطہ اعلان کر دیا ہے ۔ یوتھ ونگ کے ریاستی صدر محمد عامر کا کہنا ہے کہ الہ آباد یونیورسٹی اسٹو ڈنٹس یونین کے چناؤ میں ایم آئی ایم بڑھ چڑھ کر حصہ لے گی ۔ گذشتہ تین چار برسوں کے دوران یو پی میں ایم آئی ایم کی عوامی مقبولیت میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے ۔


خاص طور سے مسلم اکثریتی علاقوں میں ہونے والے پارٹی کے جلسوں میں نوجوانوں کی بڑی تعداد دیکھنے کو مل رہی ہے ۔ ایم آئی ایم کے تعلق سے مسلم نوجوانوں کے پر جوش رجحان کو دیکھتے ہوئے ایم آئی ایم نے بھی خود کو ایک سیاسی متبادل کے طور پر پیش کیا ہے ۔ یوتھ ونگ کے مقامی کنوینر ذیشان رحمانی کا کہنا ہے کہ ایم آئی ایم کو لیکر مسلم نوجوانوں میں نیا جوش دیکھنے کو مل رہا ہے۔ گرچے یو پی میں نصف درجن کے قریب مسلم سیاسی پارٹیاں پہلے سے ہی موجود ہیں۔ تاہم عام چناؤ میں مسلم سیاسی پارٹیاں بری طرح ناکام ثابت ہوئی ہیں۔


یو پی کے گذشتہ اسمبلی چناؤ میں ایم آئی ایم کو خاطر خواہ ووٹ ملے تھے ۔ اسی بنیاد پر ایم آئی ایم مسلم سیاست میں پائی جانے والی خلا ء کو پر کرنے کی کوشش کر رہی ہے ۔ایم آئی ایم کی ان کوششوں کا فائدہ اس کو آنے والے انتخابات میں جیت کی شکل میں مل سکتا ہے ۔
Published by: Sana Naeem
First published: Feb 13, 2021 06:44 PM IST