ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ستیش چندر مشرا کا الزام: سازش کے تحت مختار انصاری کو ووٹ ڈالنے سے روکا گیا

یوپی کی 10 راجیہ سبھا سیٹوں میں سے نو پر بی جے پی کی جیت کے بعد بی ایس پی کے جنرل سکریٹری ستیش چندرمشرا نے الزام لگایا کہ بی ایس پی کے امیدوار کو ہرانے کے لئے مختار انصاری کو ووٹ ڈالنے سے روکا گیا۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ستیش چندر مشرا کا الزام: سازش کے تحت مختار انصاری کو ووٹ ڈالنے سے روکا گیا
بی ایس پی کے جنرل سکریٹری ستیش چندرمشرا

لکھنئو۔ یوپی کی 10 راجیہ سبھا سیٹوں میں سے نو پر بی جے پی کی جیت کے بعد بی ایس پی کے جنرل سکریٹری ستیش چندرمشرا نے الزام لگایا کہ بی ایس پی کے امیدوار کو ہرانے کے لئے مختار انصاری کو ووٹ ڈالنے سے روکا گیا۔ انہوں نے کہا کہ عدالت نے مختار انصاری کو ووٹ ڈالنے کی اجازت دی تھی لیکن انہیں جیل میں ڈال کر ووٹ دینے نہیں دیا گیا۔ مشرا نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ "ہم الیکشن کمیشن کے کہنے پر عدالت گئے اور مختار انصاری کو ووٹ ڈالنے کی اجازت بھی مل گئی تھی۔"


ایسے میں انتظامیہ پر انہیں جیل سے لا کر ووٹ ڈلوانے کی ذمہ داری تھی ، لیکن ایسا نہیں کیا گیا۔ مختار انصاری کو جان بوجھ  کر ووٹ ڈالنے سے روکا گیا تاکہ بی جے پی 9 ویں نشست بھی جیت سکے۔ اس سے پہلے کے سبھی انتخابات میں مختار انصاری کو جیل سے لا کر ووٹ ڈلوایا گیا تھا۔


ستیش چندرمشرا نے بی جے پی پر سنگین الزامات لگاتے ہوئے کہا کہ انہوں نے پولیس کی طاقت پر ہمارے دو ایم ایل اے کو اغوا کر لیا ۔ان سے زور زبردستی کر کے  ووٹ لینے کا کام کیا گیا۔ اتنا ہی نہیں، جو دو ارکان اسمبلی دوسری پارٹی کے تھے ان کے ساتھ بھی بی جے پی نے زبردستی کی اور ان سے ووٹ لیا گیا۔

First published: Mar 24, 2018 10:28 AM IST