உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    حزب اختلاف کے 'نوٹ بندی' کے جواب میں حزب اقتدار کا 'آگسٹا' داؤں، پارلیمنٹ ہوئی ٹھپ

    نئی دہلی۔ لوک سبھا میں نوٹوں کی منسوخی پر بحث کرانے کی مانگ کو لے کر اپوزیشن کے شور شرابہ اور آگسٹا ویسٹ لینڈ سودا گھوٹالے میں ایک طاقتور سیاسی کنبہ کے ملوث ہونے کے الزامات پر بنچ کے ارکان کے بحث کرانے کے مطالبے پر ہوئے بھاری ہنگامہ کی وجہ سے اسپیکر سمترا مہاجن نے آج ایک بار کے التوا کے بعد ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔

    نئی دہلی۔ لوک سبھا میں نوٹوں کی منسوخی پر بحث کرانے کی مانگ کو لے کر اپوزیشن کے شور شرابہ اور آگسٹا ویسٹ لینڈ سودا گھوٹالے میں ایک طاقتور سیاسی کنبہ کے ملوث ہونے کے الزامات پر بنچ کے ارکان کے بحث کرانے کے مطالبے پر ہوئے بھاری ہنگامہ کی وجہ سے اسپیکر سمترا مہاجن نے آج ایک بار کے التوا کے بعد ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔

    نئی دہلی۔ لوک سبھا میں نوٹوں کی منسوخی پر بحث کرانے کی مانگ کو لے کر اپوزیشن کے شور شرابہ اور آگسٹا ویسٹ لینڈ سودا گھوٹالے میں ایک طاقتور سیاسی کنبہ کے ملوث ہونے کے الزامات پر بنچ کے ارکان کے بحث کرانے کے مطالبے پر ہوئے بھاری ہنگامہ کی وجہ سے اسپیکر سمترا مہاجن نے آج ایک بار کے التوا کے بعد ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ لوک سبھا میں نوٹوں کی منسوخی پر بحث کرانے کی مانگ کو لے کر اپوزیشن کے شور شرابہ اور آگسٹا ویسٹ لینڈ سودا گھوٹالے میں ایک طاقتور سیاسی کنبہ کے ملوث ہونے کے الزامات پر بنچ کے ارکان کے بحث کرانے کے مطالبے پر ہوئے بھاری ہنگامہ کی وجہ سے اسپیکر سمترا مہاجن نے آج ایک بار کے التوا کے بعد ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔ ایوان کی کارروائی دوبارہ 12 بجے شروع ہوئی تو ضروری دستاویزات ٹیبل پر رکھنے اور ضروری کام مکمل کرنے کے بعد اسپیکر نے وقفہ صفر کا اعلان کیا لیکن حزب اختلاف کے ارکان نے نوٹ بندي پر بحث کرانے کا مطالبہ دہرایا اور اس سلسلے میں شور شرابہ کرنے لگے۔ اسی درمیان بنچ کے ارکان نے اگستا ویسٹ لینڈ کا معاملہ اٹھایا اور اس پر بحث کرانے کے سلسلے میں ہنگامہ کرنے لگے۔ہنگامے کے دوران ترنمول کانگریس کے سدیپ بنديوپادھيائے نے کہا کہ سرمائی اجلاس کے آخری دو دن باقی ہیں اور نوٹ بندي پر بحث کرائی جا سکتی ہے۔ کانگریس کے ملک ارجن کھڑگے نے کہا کہ پارٹی سرمائی اجلاس کے آغاز 16 نومبر سے ہی بحث کرانے کا مسلسل مطالبہ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے اپوزیشن نے ضابطہ 56 کے تحت بحث کا مطالبہ کیا، وہ نہیں مانا گیا تو ضابطہ 184 کے تحت بحث کرانے کا مطالبہ کیا گیا اور وہ بھی نہیں مانا گیا۔اپوزیشن اس پر ہر حال میں بحث چاہتا ہے اس لئے اسپیکر بغیر ضابطہ کے ہی عوامی اہمیت کے اس معاملے پر بحث کرائے۔انہوں نے الزام لگایا کہ وزیر اعظم نے نوٹ بندي کا فیصلہ کرکے ملک کو مصیبت میں ڈال دیا ہے اور اب وہ اس معاملے پر بحث سے بھاگ رہے ہیں۔


      تلنگانہ راشٹر سمیتی کے جتندر ریڈی نے کہا کہ کُل جماعتی میٹنگ میں تمام پارٹیوں نے کہا تھا کہ کالے دھن کے خلاف جو بھی قدم اٹھایا گیا ہے وہ اچھا ہے لیکن اب اس مسئلے پر پارلیمنٹ نہیں چلنے دی جا رہی ہے۔ ترنمول کانگریس کے کلیان بنرجی اور کچھ دیگر ارکان نے اس پر اعتراض کیا اور زور زور سے ان کے مائیک کے سامنے بولنے لگے تو مسٹر ریڈی نے کہا کہ انہوں نے سب کی باتیں سنی ہیں، اس لئے اب ان کی بات بھی سنی جانی چاہئے۔ اسپیکرنے مسٹر بنرجی کا نام لے کر انہیں مسٹر ریڈی کو بولنے دینے کے لئے کہا تو مسٹر ریڈی کچھ دیر تک اپنی بات کہتے رہے۔ پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے کہا کہ وزیر اعظم نے کالے دھن کے خلاف اہم قدم اٹھایا ہے اور حکومت اس معاملے پر بحث کرانا چاہتی ہے۔ان کی حکومت اس معاملے پر بحث کے لئے پہلے دن سے ہی تیار ہے لیکن اپوزیشن بحث کرانے کی بجائے نوٹ بنانے کے جگاڑ میں ہے، اس لئے بحث نہیں ہو پا رہی ہے۔انہوں نے اگستا ویسٹ لینڈ معاملے پر ترقی پسند اتحاد حکومت پر سوال اٹھائے اور اس پر بحث کرانے کی بات کی تو اپوزیشن ارکان کا ہنگامہ بڑھ گیا اور وہ نعرے لگاتے ہوئے ایوان کے وسط میں آ گئے۔  زبردست ہنگامے کے بعد محترمہ مہاجن نے ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔

      وقفہ سوال شروع کرنے کے اعلان کے ساتھ ہی اپوزیشن اراکین نوٹ بندي پر بحث کی مانگ کو لے کر نعرے بازی شروع کر دی۔ صدر نے ارکان سے کہا کہ سوال کے بعد نوٹ بندي کے معاملے پر بحث کے بارے میں غور کیا جائے گا، لیکن ہنگامہ کر رہے اراکین نہیں مانے اور ’وی وانٹ ڈسکشن‘ کے نعرے لگاتے ہوئے نشست کے قریب پہنچ گئے۔ کانگریس، ترنمول کانگریس اور مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم) سمیت مختلف اپوزیشن جماعتوں کے اراکین ہاتھوں میں تختیاں لہراتے نظر آئے، جن پر لکھا تھا ’مزدور بھوکا ہے‘ اور ’ٹی آر ورکرز هنگري‘۔ اسی دوران بینچ کے اراکین ایک انگریزی روزنامہ کی کاپیاں لہرانے لگے۔اس اخبار میں آج شائع خبروں میں 'ڈائری بم ڈرپس آن پولیٹکل فیملی‘ کے عنوان سے اگستا ویسٹ لینڈ سودا گھوٹالے میں ملک کے ایک طاقتور سیاسی کنبہ اور اس وقت کی ترقی پسند اتحاد حکومت سے منسلک لوگوں کے ملوث ہونے کے الزامات سے متعلق خبر تھی۔محترمہ مہاجن نے حزب اقتدار اور اپوزیشن کے ارکان پر زور دیا کہ وہ تختیاں اور پوسٹر ایوان میں نہ لهرائیں۔ ایسا کرنا ہرگز درست نہیں ہے لیکن اراکین نہ مانے اور ہنگامہ کرتے رہے۔


      وہیں، راجیہ سبھا میں بھی اپوزیشن اورحزب اقتدار کے ارکان کے اپنے اپنے موقف پرقائم رہنے کی وجہ سے ہنگامے کے سبب آج 19 ویں دن بھی کوئی کام نہیں ہو سکا اور تین بار کے التوا کے بعد ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کرنی پڑی۔ ہنگامے کی وجہ سے ایوان میں گزشتہ دنوں کی طرح وقفہ صفر، وقفہ سوال اور کوئی دوسرا قانون سازی کام کاج نہیں ہو سکا۔ وقفے کے بعد جب ایوان کی کارروائی دوبارہ شروع ہوئی تو دونوں فریقوں کے ارکان نے اپنی جگہوں پر کھڑے ہو کر شور شرابہ شروع کر دیا۔سماج وادی پارٹی کے نریش اگروال، بہوجن سماج پارٹی کے ستیش چندر مشرا اور جنتا دل یونائیٹڈ کے شرد یادو نے نوٹ کی منسوخی کی وجہ سے کسانوں کو ہو نے والی مختلف پریشانی کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے کسانوں کو ریلیف فراہم کرنے کے اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا۔ حکمراں بینچ کے رکن بھی کچھ کہہ رہے تھے لیکن شور میں ان کی آواز نہیں سنی جا سکی۔ ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے دونوں طرف سے ارکان سے خاموش ہو کر ایوان کی کارروائی چلنے دینے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ہی فریقوں کے رکن جس طرح کا برتاؤ کر رہے ہیں اس سے لگتا ہے کہ وہ ایوان میں کام نہیں کرنا چاہتے۔ اراکین پر اپنی اپیل کا اثر نہ ہوتے دیکھ انہوں نے ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔ اس سے پہلے صبح بھی دونوں فریقوں کے ہنگامے کی وجہ سے ایوان کی کارروائی تین بار ملتوی کرنی پڑی۔ سرمائی اجلاس کے 19 ویں دن بھی اس طرح اعلی ایوان میں کوئی کام نہیں ہو سکا۔ سیشن کا کل آخری دن ہے اور دونوں فریقوں کے اپنے رخ پر قائم رہنے سے لگتا ہے کہ یہ مکمل سیشن بغیر کام کاج کے ہی ختم ہو جائے گا۔

      First published: