உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نیشنل ہیرالڈ معاملہ پر پارلیمنٹ میں لگے نعرے، مودی تیری داداگیری نہیں چلے گی

    نئی دہلی۔ نیشنل ہیرالڈ معاملے میں آج بھی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں جم کر ہنگامہ مچا۔

    نئی دہلی۔ نیشنل ہیرالڈ معاملے میں آج بھی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں جم کر ہنگامہ مچا۔

    نئی دہلی۔ نیشنل ہیرالڈ معاملے میں آج بھی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں جم کر ہنگامہ مچا۔

    • IBN Khabar
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ نیشنل ہیرالڈ معاملے میں آج بھی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں جم کر ہنگامہ مچا۔ دہلی کی عدالت میں پیشی کو لے کر کانگریس نے حکومت پر انتقامی کارروائی کا الزام لگاتے ہوئے جم کر ہنگامہ کیا۔ دونوں ایوانوں میں کانگریس ممبران پارلیمنٹ ویل تک آکر حکومت کے خلاف نعرے بازی کرنے لگے جس کے بعد راجیہ سبھا کی کارروائی بار بار ملتوی کرنی پڑی۔

      کانگریس کے ارکان نے لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں ہنگامہ کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف نعرے بازی کی۔ راجیہ سبھا میں کانگریس ممبران پارلیمنٹ نے مودی پر نشانہ سادھا اور 'مودی تیری داداگيری نہیں چلے گی' کے نعرے لگائے۔

      لوک سبھا میں اپوزیشن لیڈر ملیکاارجن کھڑگے نے کہا کہ اس وقت ملک دو طرح کے قانون پر چل رہا ہے۔ حکمراں فریق کے لئے ایک قانون ہے اور اپوزیشن کے لئے دوسرا قانون۔ کھڑگے نے کہا، آپ نے کل پوچھا تھا کہ کانگریس کیوں مخالفت کر رہی ہے۔ میں بولنا چاہتا ہوں۔ لیکن اسپیکر نے اجازت دینے سے انکار کر دیا۔ انہوں نے وقفہ سوالات کے بعد بولنے کو کہا۔ اس پر کانگریس ممبران پارلیمنٹ بھڑک گئے اور لوک سبھا میں نعرے بازی کرنے لگے۔

      بعد میں سوال کے دوران کھڑگے نے اپنی بات رکھی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کر رہی ہے۔ لیکن ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے۔ حکومت کی کوشش کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ ہم اس کے خلاف احتجاج جاری رکھیں گے۔ مودی حکومت میں ای ڈی اور سی بی آئی کا استعمال اپوزیشن کو ڈرانے کے لئے ہو رہا ہے۔ کھڑگے نے وی کے سنگھ کےکتا والے بیان کو لے کر ان کو ہٹانے کا بھی مطالبہ کیا۔

      پارلیمانی امور کے وزیر وینکیا نائیڈو نے اس کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ کورٹ کے حکم میں حکومت کا کوئی رول نہیں ہے۔ نیشنل ہیرالڈ کیس کانگریس حکومت کے دوران درج ہوا تھا۔ کانگریس ہنگامہ کرکے ملک کی ترقی میں خلل ڈالنے کی کوشش کر رہی ہے۔ کانگریس مینڈیٹ کا احترام کرے۔ ہمارے کسی وزیر نے غلط کام نہیں کیا ہے۔ وی کے سنگھ کو عدالت نے تمام الزامات سے بری کر دیا ہے۔ کانگریس حکومت کو ناکام کرنا چاہتی ہے۔
      First published: