உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اتراکھنڈ پر پارلیمنٹ میں ہنگامہ، 'جمہوریت کے قاتلوں شرم کرو' کے لگے نعرے

    نئی دہلی۔ جیسا کہ اندیشہ تھا آج سے شروع ہو رہے پارلیمنٹ اجلاس میں اتراکھنڈ مسئلے کو لے کر دونوں ایوانوں میں زوردار ہنگامہ مچا۔

    نئی دہلی۔ جیسا کہ اندیشہ تھا آج سے شروع ہو رہے پارلیمنٹ اجلاس میں اتراکھنڈ مسئلے کو لے کر دونوں ایوانوں میں زوردار ہنگامہ مچا۔

    نئی دہلی۔ جیسا کہ اندیشہ تھا آج سے شروع ہو رہے پارلیمنٹ اجلاس میں اتراکھنڈ مسئلے کو لے کر دونوں ایوانوں میں زوردار ہنگامہ مچا۔

    • IBN Khabar
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ جیسا کہ اندیشہ تھا آج سے شروع ہو رہے پارلیمنٹ اجلاس میں اتراکھنڈ مسئلے کو لے کر دونوں ایوانوں میں زوردار ہنگامہ مچا۔ اس کے لئے کانگریس کو بائیں بازو، جے ڈی یو اور دوسری اپوزیشن جماعتوں کا بھی ساتھ ملا۔ اپوزیشن نے دونوں ایوانوں میں حکومت کو گھیرا اور جم کر نعرے بازی کی۔

      راجیہ سبھا میں کارروائی شروع ہوتے ہی کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد نے ایوان میں اتراکھنڈ پر بحث کرائے جانے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ اروناچل میں بھی کانگریس کی منتخب حکومت کو گرایا گیا۔ ملک میں جمہوریت کی توہین ہو رہی ہے۔ مرکز جان بوجھ کر اپوزیشن کو بھڑکا رہا ہے۔

      اس پر پارلیمانی امور کے وزیر مملکت مختار عباس نقوی نے کہا کہ کورٹ میں چل رہے معاملے پر بحث نہیں کرائی جا سکتی۔ مختار نے شور شرابے کے درمیان کہا کہ یہ (اپوزیشن) مودی حکومت کو اچھا کام کرتے نہیں دیکھ سکتے۔

      بحث کرائے جانے کی مانگ کو لے کر کانگریس ممبران پارلیمنٹ ویل تک آ گئے اور جمہوریت کے قاتلوں شرم کرو کے نعرے لگانے لگے۔ ڈپٹی چیئرمین کی مداخلت پر بھی ممبر پارلیمنٹ پرسکون نہیں ہوئے۔ اس کے چلتے ایوان کی کارروائی 12 بجے تک ملتوی کرنی پڑی۔
      First published: