உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اس بار سڑکوں پر نہیں پڑھی جائے گی جمعۃ الوداع کی نماز، علما کی اپیل محلے کی مسجد میں ہی ادا کریں نماز

       عوامی مقامات پر مذہبی تقریبات پر پابندی لگانے کے سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ کے حکم کا اثر ہو رہا ہے۔ رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو ہونے والی جمعۃ الوداع juma tul wida یعنی الوداع کے جمعہ کی نماز اس بار سڑکوں پر نہیں پڑھی جائے گی۔

    عوامی مقامات پر مذہبی تقریبات پر پابندی لگانے کے سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ کے حکم کا اثر ہو رہا ہے۔ رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو ہونے والی جمعۃ الوداع juma tul wida یعنی الوداع کے جمعہ کی نماز اس بار سڑکوں پر نہیں پڑھی جائے گی۔

    عوامی مقامات پر مذہبی تقریبات پر پابندی لگانے کے سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ کے حکم کا اثر ہو رہا ہے۔ رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو ہونے والی جمعۃ الوداع juma tul wida یعنی الوداع کے جمعہ کی نماز اس بار سڑکوں پر نہیں پڑھی جائے گی۔

    • Share this:
      پریاگ راج۔ مذہبی مقامات پر لاؤڈ اسپیکر کے شور کو کم کرنے اور عوامی مقامات پر مذہبی تقریبات پر پابندی لگانے کے سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ کے حکم کا اثر ہو رہا ہے۔ رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو ہونے والی جمعۃ الوداع juma tul wida یعنی الوداع کے جمعہ کی نماز اس بار سڑکوں پر نہیں پڑھی جائے گی۔ جامع مسجد کے امام مولانا سید محمد رئیس اختر حبیبی نے سی ایم یوگی کی ہدایات کے بعد پولیس انتظامیہ کی مرکزی امن کمیٹی کے ساتھ میٹنگ کے بعد لوگوں سے اپیل جاری کی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ اس سال مقامی انتظامیہ نے عوامی مقامات پر الوداع کی نماز پر پابندی عائد کر دی ہے۔

      مسجد انتظام کمیٹی کی کوششوں کے باوجود سڑک پر الوداع جمعہ کی نماز کی اجازت نہیں دی گئی۔ تاہم جامع مسجد کے امام نے اپیل میں کہا ہے کہ گزشتہ کئی سالوں سے الوداع جمعہ کی نماز چوک، جامع مسجد، ٹھھری بازار، راجہ پتی پھل منڈی گھنٹہ گھر سمیت سڑکوں پر ادا کی جاتی تھی۔ لیکن اس بار اجازت نہ ملنے کی وجہ سے نماز صرف جامع مسجد کے اندر ہی ادا کی جائے گی۔ انہوں نے نمازیوں سے اپیل کی ہے کہ وہ صرف اپنے علاقے کی مساجد میں ہی نماز پڑھیں۔ ان کی اس اپیل کا بھی اثر ہو رہا ہے، لوگوں نے اپنے علاقے کی مساجد میں نماز پڑھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

      یہ بھی پڑھئے: Loudspeaker Controversy:مذہبی آزادی کےنام پرنہ ہو من مانی،دوسروں کوتکلیف دینامذہب میں نہیں

      یہ بھی پڑھیں: Zakat and Sadaqah: ماہ رمضان میں صدقہ و خیرات دینے کا اجر، اور اس کی فضیلت، جانئے یہاں

      پولیس انتظامیہ الوداع کے لیے تیار ہے
      ایس پی سٹی دنیش کمار سنگھ کے مطابق الوداع جمعہ کی نماز کے حوالے سے حکومت کی ہدایات پر تمام مذاہب کے مذہبی رہنماؤں سے مسلسل رابطہ کیا جا رہا ہے۔ ایس پی سٹی کے مطابق مرکزی امن کمیٹی کے ساتھ نماز جمعۃ الوداع کے حوالے سے میٹنگ کی گئی تھی ۔ اس میں لوگوں سے مساجد میں ہی نماز پڑھنے کی اپیل کی گئی ہے۔ ایس پی سٹی کے مطابق سٹی ایریا میں 319 مساجد ہیں جن میں سے 289 مساجد میں نماز جمعہ ادا کی جاتی ہے۔ ایس پی سٹی نے کہا ہے کہ رمضان المبارک کے الوداع جمعہ کی نماز کے لیے تین کمپنیاں پی اے سی، آر اے ایف اور اضافی پولیس فورس دی گئی ہے۔ یہ پولیس فورس شہری علاقے کی تمام مساجد میں تعینات کی جائے گی۔ لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ عوامی مقامات کو بلاک نہ کریں۔ جمعۃ الودا کی نماز پرامن طریقے سے ادا کی جائے۔ پولیس انتظامیہ اس حوالے سے پوری طرح تیار ہے اور وسیع انتظامات کئے جا رہے ہیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: