உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP Politics : اکھلیش یادو کے بیان پر بھڑکے اسد الدین اویسی ، کہا : انہیں تاریخ پڑھنی چاہئے

    UP Politics : اکھلیش یادو کے بیان پر بھڑکے اسد الدین اویسی ، کہا : انہیں تاریخ پڑھنی چاہئے

    UP Politics : اکھلیش یادو کے بیان پر بھڑکے اسد الدین اویسی ، کہا : انہیں تاریخ پڑھنی چاہئے

    اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اور ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے کہا کہ اکھلیش یادو کو یہ بات اچھی طرح سے سمجھ لینی چاہئے کہ ہندوستانی مسلمانوں کا جناح سے کوئی لینا دینا نہیں ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے بیان پر اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اور ممبر پارلیمنٹ اسد الدین اویسی نے شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اکھلیش یادو کو یہ بات اچھی طرح سے سمجھ لینی چاہئے کہ ہندوستانی مسلمانوں کا جناح سے کوئی لینا دینا نہیں ہے ۔ ہمارے بزرگوں نے دو ملک تھیوری کو خارج کردیا تھا اور انہوں نے ہندوستان کو اپنا ملک منتخب کیا تھا ۔ اویسی نے کہا کہ ہندوستان میں کوئی بھی مسلم ووٹ بینک نہیں تھا اور نہ رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں ہمیشہ سے ہندو ووٹ بینک تھا اور رہے گا ۔

      اترپردیش میں اگلے سال اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں اور اب سبھی سیاسی پارٹیاں اکھلیش یادو کو گھیرنے کی کوشش میں مصروف ہیں ۔ اویسی نے کہا کہ ہندوستان میں کبھی بھی مسلم ووٹ بینک نہیں تھا اور نہ رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں ہمیشہ سے ہندو ووٹ بینک تھا اور رہے گا ۔ اویسی نے یہ بیان اترپردیش کے سہارنپور میں منعقدہ ایک ریلی میں دیا ۔

      بتادیں کہ ہردوئی کی ریلی میں اکھلیش یادو نے کہا تھا کہ آج پورا ملک سردار پٹیل کو یاد کررہا ہے ۔ ان کی جینتی منارہا ہے ۔ ولبھ بھائی پٹیل کا ملک کو ایک رکھنے میں اور خوشحال رکھنے میں بڑا کردار رہا ہے اور انہوں نے خود کسانوں کی لڑائی لڑئی ، اس لئے انہیں سردار اور لوح پرش بھی کہا جاتا ہے ۔

      یادو نے ہندوستان کی آزادی میں محمد علی جناح کے کردار پر کہا کہ سردار ولبھ بھائی پٹیل ، مہاتما گاندھی ، جواہر لال نہرو اور جناح نے اسی ادارہ سے پڑھائی کی اور بیرسٹر بنے اور ہندوستان کی آزادی کیلئے کسی بھی جدوجہد سے پیچھے نہیں ہٹے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: