اپنا ضلع منتخب کریں۔

    کوہرے کا قہر: بہرائچ میں روڈویز بس کو ٹرک نے ماری ٹکر، 6 لوگوں کی موت، 15 زخمی

    bahraich road accident: ٹکر اتنی شدید تھی کہ 6 افراد موقع پر ہی جاں بحق جب کہ 15 مسافر زخمی ہوئے جن میں سے 4 کی حالت تشویشناک بتائی جارہی  ہے۔ تمام زخمیوں کو قریبی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

    bahraich road accident: ٹکر اتنی شدید تھی کہ 6 افراد موقع پر ہی جاں بحق جب کہ 15 مسافر زخمی ہوئے جن میں سے 4 کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ تمام زخمیوں کو قریبی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

    bahraich road accident: ٹکر اتنی شدید تھی کہ 6 افراد موقع پر ہی جاں بحق جب کہ 15 مسافر زخمی ہوئے جن میں سے 4 کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ تمام زخمیوں کو قریبی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Bahraich, India
    • Share this:
      بہرائچ: بدھ کی صبح لکھنؤ-بہرائچ ہائی وے پر ایک بڑا سڑک حادثہ اس وقت پیش آیا جب روڈ ویز کی بس ایک ٹرک سے ٹکرا گئی۔ ٹکر اتنی شدید تھی کہ 6 افراد موقع پر ہی جاں بحق جب کہ 15 مسافر زخمی ہوئے جن میں سے 4 کی حالت تشویشناک بتائی جارہی  ہے۔ تمام زخمیوں کو قریبی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ شدید زخمیوں کو لکھنؤ ٹراما سینٹر ریفر کر دیا گیا ہے۔

      موصولہ اطلاع کے مطابق یہ حادثہ صبح تقریباً 4:30 بجے پیش آیا، جب تیز رفتار ٹرک دھند کی وجہ سے لکھنؤ عیدگاہ ڈپو کے روڈ ویز سے ٹکرا گیا۔ یہ حادثہ جروال تھانہ علاقہ کے گھرگھرا گھاٹ کے قریب پیش آیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ کوہرے کی وزیبلیٹی کافی کم تھی جس  کی وجہ سے یہ حادثہ پیش آیا۔ حادثے کی اطلاع ملتے ہی سی او اور ایس ڈی ایم قیصر گنج موقع پر پہنچے اور راحت بچاؤ کا کام شروع کیا۔ حادثہ کا شکار بس لکھنؤ سے بہرائچ جا رہی تھی۔

      ٹرک ڈرائیور فرار
      حادثے کے بعد پولیس موقع پر پہنچ گئی اور ٹرک کی تلاش کر رہی ہے۔ پولیس ٹرک کی شناخت کے لیے قریبی ڈھابوں پر نصب سی سی ٹی وی کیمروں کو بھی اسکین کر رہی ہے۔ ڈی ایم ڈاکٹر دنیش چندرا نے کہا کہ ابتدائی طور پر حادثہ ٹرک کے غلط طرف سے آنے کی وجہ سے پیش آیا۔ معاملے میں ٹرک کی تلاش جاری ہے۔







      سی ایم یوگی نے غم کا اظہار کیا۔
      وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے بہرائچ سڑک حادثہ میں جانی نقصان پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے مرنے والوں کے اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا۔ انہوں نے ڈی ایم اور پولیس کے اعلیٰ حکام کو حادثے میں زخمی ہونے والے لوگوں کو مناسب علاج فراہم کرنے کی ہدایت دی اور ان کی جلد صحت یابی کی بھی خواہش کی۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: