உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    6 ماہ کی بچی کو جیل بھیجنے کی گزارش کر رہے ہیں گھر والے، وجہ کر دے گی حیران

     اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا کسی کو اس 6 ماہ کی بچی پر ترس آتا ہے ورنہ وہ اس طرح ماں کے بغیر اپنی دادی کے ساتھ رہے گی۔ سوال یہ بھی ہے کہ اگر ماں کے بغیر اس کی حالت بگڑتی ہے تو اس کا ذمہ دار کون ہوگا؟

    اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا کسی کو اس 6 ماہ کی بچی پر ترس آتا ہے ورنہ وہ اس طرح ماں کے بغیر اپنی دادی کے ساتھ رہے گی۔ سوال یہ بھی ہے کہ اگر ماں کے بغیر اس کی حالت بگڑتی ہے تو اس کا ذمہ دار کون ہوگا؟

    اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا کسی کو اس 6 ماہ کی بچی پر ترس آتا ہے ورنہ وہ اس طرح ماں کے بغیر اپنی دادی کے ساتھ رہے گی۔ سوال یہ بھی ہے کہ اگر ماں کے بغیر اس کی حالت بگڑتی ہے تو اس کا ذمہ دار کون ہوگا؟

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Uttar Pradesh | Chitrakoot
    • Share this:
      چترکوٹ۔ اب تک آپ نے جیل جانے سے بچنے کے لیے اہلکاروں اور عدالتوں کے چکر لگانے کی خبریں دیکھی یا سنی ہوں گی لیکن چترکوٹ میں ایک بچی کے رشتہ دار حکام سے اسے جیل بھیجنے کی درخواست کر رہے ہیں۔ چترکوٹ ضلع میں ایک 6 ماہ کی بچی کو جیل بھیجنے کے لیے اس کے اہل خانہ افسران کے چکر لگانے پر مجبور ہیں۔

      دراصل چترکوٹ ضلع کے راجا پور تھانہ علاقے کے قصبے میں رام لیلا دیکھنے کے دوران ایک نوجوان خاتون کے ساتھ پولیس کے ذریعے قابل اعتراض حرکت کرنے پر مشتعل ہجوم نے دو پولیس اہلکار کی پٹائی کردی تھی۔ جس پر پولیس نے 20 نامزد اور 50 نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرتے ہوئے 7 افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔ جس میں پوجا نامی ایک شادی شدہ خاتون بھی شامل ہے۔ جس کی 6 ماہ کی بچی ہے۔ پولیس نے خاتون کو پولیس پر حملہ کرنے پر جیل بھیج دیا ہے لیکن اس کی بیٹی کو اس کے والدین کے حوالے چھوڑ دیا گیا ہے۔

      اب ایسے ہی نہیں بیچ سکتے کنڈوم، فیس ماسک اور چشمہ، یہ کام کرنا ہوگا لازمی

      آگرہ کے اسپتال میں بھیانک آگ، آرپیٹر اور اس کے بیٹے۔بیٹی کی موت، تین مریضوں کی حالت سنگین

      دودھ پینے والی بچی کی دیکھ بھال کرنے والا گھر میں کوئی نہیں ہے کیونکہ اس کی ماں جیل جا چکی ہے جس کی وجہ سے بچی کو ماں کا دودھ تک نہیں پا رہا ہے۔ ماں کی غیر موجودگی میں معصوم دن بھر روتی رہتی ہے۔ بچی کو بچانے کے لیے اس کی دادی اسے اس کی ماں کے جیل بھیجنے کے لیے افسران کے چکر لگا رہی ہیں۔ لیکن اس کی کہیں سنوائی نہیں ہو رہی تھی۔ جس کے بعد آج گھر والے لڑکی کو لے کر ڈسٹرکٹ جیل رگولی پہنچے۔ جہاں جیل حکام سے بچی کو ماں کے پاس لے جانے کی درخواست کی لیکن جیل افسران نے بھی عدالت کے حکم کے بغیر بچی کو لے جانے سے انکار کر دیا۔

      اس کے اہل خانہ بچی کے لیے پریشان ہیں۔ اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا 6 ماہ کی بچی کو بھی جیل جانا پڑے گا؟ خاتون نے صدر کے ایم ایل اے انیل پردھان سے 6 ماہ کی بچی کو جیل بھیجنے کی بھی اپیل کی ہے۔ لیکن کسی نے بھی اس کی مدد نہیں کی۔ ایسے میں اس 6 ماہ کی بچی کا کیا قصور ہے جو وہ اپنی ماں سے دور ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا کسی کو اس 6 ماہ کی بچی پر ترس آتا ہے ورنہ وہ اس طرح ماں کے بغیر اپنی دادی کے ساتھ رہے گی۔ سوال یہ بھی ہے کہ اگر ماں کے بغیر اس کی حالت بگڑتی ہے تو اس کا ذمہ دار کون ہوگا؟
      Published by:Sana Naeem
      First published: