ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : بورڈ امتحانات منسوخ لیکن پروموشن اور تعلیمی نظام کو لیکر مدارس کے سامنے نئے چیلنجز

کورونا وبا کے خطرے کے سبب بورڈ امتحانات کو منسوخ کیے جانے کے یوپی مدرسہ بورڈ کے فیصلے کے بعد اب بارہویں جماعت تک کے سبھی بچوں کو اگلی جماعت کے لیے پروموٹ کرنے کا راستہ صاف ہو گیا ہے ۔

  • Share this:
میرٹھ : بورڈ امتحانات منسوخ لیکن پروموشن اور تعلیمی نظام کو لیکر مدارس کے سامنے نئے چیلنجز
میرٹھ : بورڈ امتحانات منسوخ لیکن پروموشن اور تعلیمی نظام کو لیکر مدارس کے سامنے نئے چیلنجز

میرٹھ : سینٹرل بورڈ اور یوپی کے مادھیامك شکشا بورڈ کی طرز پر یوپی مدرسہ بورڈ نے بھی دسویں اور بارہویں جماعت کے بورڈ امتحانات کو سال 2020 / 21 کے سیشن کے لئے ختم کر دیا ہے ، لیکن ان جماعتوں میں طالب علموں کے پروموشن کو لیکر جہاں مدرسہ انتظامیہ کو کئی مشکلات کا سامنا ہے ، وہیں طالب علموں کے سامنے بھی مستقبل کے چیلنج پیدا ہو گئے ہیں ۔


کورونا وبا کے خطرے کے سبب بورڈ امتحانات کو منسوخ کیے جانے کے یوپی مدرسہ بورڈ کے فیصلے کے بعد اب بارہویں جماعت تک کے سبھی بچوں کو اگلی جماعت کے لیے پروموٹ کرنے کا راستہ صاف ہو گیا ہے ۔ تاہم گزشتہ سال کی طرح اس سال بھی مدرسہ تعلیم متاثر ہونے اور مدرسہ طالب علموں کے لیے آن لائن تعلیمی نظام کے بہتر نہ ہونے سے اب پروموشن کے لیے تشخیص کا  کام مدارس کے لیے بڑا چیلنج ثابت ہو رہا ہے ۔


وہیں پروموشن کے ذریعہ پاس کا سرٹیفکیٹ حاصل ہونے کی فکر میں طالب علموں کو مستقبل کا خوف ستا رہا ہے ۔ گزشتہ دو سال سے مدرسہ طالب علموں کے تعلیمی نظام اور موجودہ حالات کو پیش نظر رکھتے ہوئے اب مدرسہ منتظمین اور اساتذہ بچوں کے لیے آن لائن تعلیم کی جگہ کلاس روم تعلیم شروع کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔


مدرسہ تعلیمی نظام میں آن لائن تعلیم کے اپنے چیلنجز ہیں ، ایسے میں یا تو بچوں کے لیے آن لائن تعلیم کی بہتر سہولیات دستیاب کرائی جائے یا پھر  کلاس روم تعلیم کی راہ ہموار کی جائے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 16, 2021 09:09 PM IST