உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Meerut: ایودھیا پر لکھی کتاب خریدنے کا چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی نے جاری کیا کر سرکلر ، مچا ہنگامہ

    Meerut: ایودھیا پر لکھی کتاب خریدنے کا چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی نے جاری کیا کر سرکلر!

    Meerut: ایودھیا پر لکھی کتاب خریدنے کا چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی نے جاری کیا کر سرکلر!

    میرٹھ یونیورسٹی نے اپنے الحاق شدہ کالجوں کو ایودھیا پر کتاب پڑھانے اور خریدنے کی سفارش کی ہے۔ تاہم رجسٹرار دھریندر کمار ورما نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی نے صرف کتاب خریدنے پر غور کرنے کو کہا تھا۔

    • Share this:
    میرٹھ : میرٹھ کی چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی کے رجسٹرار آفس کے ذریعے ایک سرکلر جاری کیا گیا ہے، جس میں یونیورسٹی اور یونیورسٹی سے منسلک کالجوں کو ایودھیا پرمپرا سنسکرتی وراثت نام کی کتاب کو خریدنے کے لئے کہا گیا ہے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے اس طرح کا سرکلر جاری کرنے پر کچھ سیاسی اور سماجی افراد نے اعتراض ظاہر کیا ہے ۔ ان افراد کا کہنا ہے کہ سرکاری تعلیمی اداروں اور یونیورسٹی کالج میں کسی خاص مذہب یہ مذہبی مقامات سے منسوب کتاب کو رکھنے کے لیے اس طرح کا سرکلر جاری کرنا غیر مناسب ہے اور کسی بھی یونیورسٹی انتظامیہ کو کسی  مصنف کی کتاب کی اس طرح تشہیر نہیں کرنی چاہئے۔ وہیں یونیورسٹی انتظامیہ نے اس معاملے میں کسی طرح کے تنازعہ سے انکار کیا ہے ۔ یونیورسٹی کے رجسٹرار کا  کہنا ہے کہ کتاب کی خرید کو لازمی نہیں کیا گیا ہے ۔

    میرٹھ یونیورسٹی نے اپنے الحاق شدہ کالجوں کو ایودھیا پر کتاب پڑھانے اور خریدنے کی سفارش کی ہے۔ تاہم رجسٹرار دھریندر کمار ورما نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی نے صرف کتاب خریدنے پر غور کرنے کو کہا تھا۔ میرٹھ یونیورسٹی سے منسلک کالجوں کو جاری کردہ ایک سرکلر میں رجسٹرار دھریندر کمار ورما نے ملحقہ کالجوں اور دیگر اداروں کے سربراہوں سے کہا کہ وہ 'ایودھیا پرمپرا سنسکرتی وراثت نامی کتاب خریدنے پر غور کریں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: بانیہال اسپتال میں پیش آئے واقعہ پر ڈائریکٹر ہیلتھ کا بڑا بیان، کہی یہ بات


    اس کتاب کے مصنف يتیندر مشرا ہیں۔ یہ کتاب آن لائن 6000 روپے میں دستیاب ہے۔ جانکاری کے مطابق یہ سرکلر میرٹھ یونیورسٹی کی وی سی سنگیتا شکلا کی جانب سے کالجوں کو بھیجا گیا تھا۔ سرکلر میں کہا گیاکہ یہ کتاب ہندی اور سنسکرت زبانوں میں دستیاب ہے... اس میں نایاب تصاویر کا مجموعہ ہے... یہ کالجوں کے لیے بہت مفید ثابت ہوگی، لہذا کتاب خریدنے پر غور کریں ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: شیوراج حکومت میں ائمہ وموذنین تنخواہوں سے محروم


    ذرائع کے مطابق یونیورسٹی اس کتاب کو الحاق شدہ کالجوں میں پڑھانے کے لیے خریدنے پر بھی غور کر رہی ہے۔ میرٹھ یونیورسٹی سے مغربی یوپی تک سینکڑوں الحاق شدہ کالج ہیں۔ کالجوں سے کتابیں خریدنے کے لیے کہنے پر اپوزیشن جماعتوں نے یونیورسٹی انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ  بنایا ہے ۔ میرٹھ میں سماج وادی پارٹی  کے ایک سینئر لیڈر اور انجمن جمہوریت پسند مصنفین نے کہا کہ یہ شرمناک ہے کہ یونیورسٹی، جو کہ اعلیٰ تعلیم کا مرکز ہے، مذہبی کتاب کا پرچار کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

    کانگریس کے ایک مقامی کارکن نے بھی یونیورسٹی پر تنقید کی۔ کانگریس لیڈر نے کہا کہ ایسا اس وقت ہوتا ہے، جب آر ایس ایس کے کارکنوں کو یونیورسٹیوں کے وائس چانسلر کے طور پر مقرر کیا جاتا ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: